نیب آرڈیننس حکومت کی چوری چھپانے کے لئے ہے، شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد: رہنما مسلم لیگ ن اور سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ نیب آرڈیننس حکومت کی چوری چھپانے کے لئے ہے۔ نیب آرڈیننس کو عدالت اور سینیٹ میں چیلنج کیا جائے گا۔

اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چیئرمین نیب کو ریٹائر ہوئے چار دن گزر گئے، چیئرمین نیب سے متعلق مشاورت کا کوئی عمل شروع نہیں ہوسکا۔ ان کا کہنا تھا کہ احتساب کی سرکس جاری ہے اور اب تو حکومت بھی اس میں شامل ہوگئی ہے۔ پورا احتساب کا عمل ایک چیئرمین کے سر ہر ہے۔ حکومت نے اپنی چوری بچانے کی کوشش کرنی ہے وہ اسی چیئرمین کے ذمہ ہے۔ لگتا ہے یہ چیئرمین تاحیات رہیں گے۔

شاہد خاقان نے کہا کہ وقت بتائے گا کہ اس چیئرمین کا وزیراعظم کا کیا حال ہوگا، سب دیکھیں گے۔ یہ آرڈیننس صرف نیب کے نظام، حکومت کی چوری بچانے کیلئے استعمال ہو گا،معیشت تباہ ہوتی جا رہی ہے، نہ حکومت کو پرواہ ہے، نہ وزیروں کو پرواہ ہے۔ جمعے کی شام کو آرڈیننس آیا ہے، اسے ہائیکورٹ، سپریم کورٹ، سینیٹ میں چیلنج کیا جائے گا۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی کے متعلق سوال کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کا کہ پیپلزپارٹی پی ڈی ایم کا حصہ نہیں ہے لیکن ملکی معاملات پر پیپلزپارٹی سے مشاورت ہوتی ہے، پی ڈی ایم 16اکتوبر کو فیصل آباد میں جلسہ کرے گی، 18 اکتوبر کو پی ڈی ایم اجلاس میں آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More