چین کا تائیوان کے اطراف فوجی مشقیں جاری رکھنے کا فیصلہ

بیجنگ: چین نے تائیوان کے اطراف فوجی مشقیں جاری رکھنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق چینی وزارتِ خارجہ کا کہنا ہے کہ  تائیوان چین کا حصہ ہے، مشقیں اپنی سمندری حدود میں کر رہے ہیں۔ فوجی مشقیں آزاد، شفاف اور پیشہ ورانہ طریقوں سے ہو رہی ہیں۔

چین نے پچھلے ہفتے امریکی اسپیکر نینسی پلوسی کے متنازع دورۂ تائیوان کے خلاف فوجی مشقیں شروع کی تھیں۔

واضح رہے کہ چین نے تائیوان کے ارد گرد 6 فضائی علاقوں کو خطرناک زونز قرار دیا ہے۔ چین کی جانب سے اس علاقے میں 4 سے 12 اگست تک بین الاقوامی پروازیں بند کر دی گئی ہیں۔

خیال رہے کہ چین نے امریکی ایوان نمائندگان اسپیکر نینسی پیلوسی کے تائیوان کے دورے کے بعد امریکہ کے ساتھ مختلف معاملات پر تعاون ختم کرنے کا اعلان کیا ہے۔

چینی وزارت خارجہ نے تائیوان کے دورے پر نینسی پیلوسی کے “چین کی سخت مخالفت” کا حوالہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ بیجنگ چین امریکہ موسمیاتی تبدیلی کے مذاکرات کو معطل کر دے گا۔

انہوں نے کہا کہ بیجنگ اور واشنگٹن کے عسکری رہنماؤں کے درمیان ملاقات کے ساتھ 2 سیکیورٹی اجلاس کا منصوبہ بھی ختم کر دیا جائے گا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More