پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس، چیئرمین نیب پیش

اسلام آباد: پبلک اکاﺅنٹس کمیٹی نے اگلا ان کیمرہ اجلاس چھ جنوری کو طلب کرتے ہوئے نیب سے ریکوریز کی تفصیلات مانگ لیں جبکہ چیئر مین نیب نے کہا ہے کہ پارلیمنٹ سپریم ترین ادارہ ہے، اس بارے کسی کو کوئی ابہام نہیں ہونا چاہیے۔

پبلک اکاﺅنٹس کمیٹی کااجلاس رانا تنویر حسین کی زیر صدارت ہوا جس میں چیئرمین نیب جاوید اقبال نے بھی شرکت کی۔ چیئر مین نیب جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہاکہ نیب اپنے آپ کو قانون سے بالا تر نہیں سمجھتا، میں چیئرمین نیب ہوں، مغلیہ بادشاہ نہیں ہوں، پارلیمنٹ سپریم ترین ادارہ ہے، اس بارے کسی کو کوئی ابہام نہیں ہونا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ نیب کا چار سال کا آڈٹ ہو چکا ہے، ایک دو بار جائز وجوہات کی بنیاد پر پی اے سی میں پیش نہیں ہوسکا۔ چیئرمین نیب نے کہا کہ نیب احتساب کیلئے ہر وقت تیار ہے، ایک بار آنکھ کے آپریشن کی وجہ سے نہیں آسکا تھا۔ چیئر مین پی اے سی رانا تنویر حسین نے ریمارکس دیے کہ شکر ہے کفر ٹوٹا خدا خدا کرکے، آپ پارلیمنٹ کو جواب دہ ہیں، آپ آئیں گے تو عزت ہوگی۔

رانا تنویر حسین نے کہاکہ بطور سابق جج آپ کو قانون کی زیادہ پاسداری کرنی چاہیے، ہم آپ سے زیادہ توقع رکھتے ہیں۔ نور عالم خان نے کہاکہ ہمارا کوئی ذاتی عناد نہیں، آپ شریف آدمی ہیں، ہمیں بتایا جائے سیاستدانوں اور دیگر لوگوں کیخلاف کتنے مقدمات ہیں۔ چیئر مین نے کہا کہ یہ معاملہ آج کے ایجنڈے مین شامل نہیں ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More