کراچی میں اسٹریٹ کرائم کی یومیہ وارداتوں کی شرح236 تک جا پہنچی

کراچی: شہر میں اسٹریٹ کرمنلز بے لگام ہو گئے۔یومیہ وارداتوں کی شرح236 تک جا پہنچی۔

کراچی میں 6ماہ میں اسٹریٹ کرائم کی وارداتیں 42ہزار7سوسے تجاوز کر گئیں۔اسٹریٹ کرائم کی یومیہ وارداتوں کی شرح236 تک جا پہنچی۔ ذرائع سی پی ایل سی کے مطابق گزشتہ سال کے چھ ماہ میں یومیہ وارداتوں کی شرح 214 تھی۔گذشتہ سال کی نسبت رواں سال اسٹریٹ کرائم کی 4ہزار وارداتیں زیادہ رپورٹ ہوئیں۔

ذرائع سی پی ایل سی کا کہنا ہے کہ رواں سال اسلحے کے زور پر 14ہزار435 موبائل فونز ،2431 موٹرسائیکلیں چھینی گئیں۔سال 2022 کے 6 ماہ میں موٹرسائیکل چوری کی وارداتیں 24ہزار 730 تک جا پہنچیں۔ رواں سال چھ ماہ میں گاڑی چھیننے کی81،چوری کی 1089وارداتیں رپورٹ ہوئیں۔سال2021 کی نسبت گاڑی چوری میں 34 فیصداضافہ،موبائل فونز چھیننے کی وارداتیں 16فیصد بڑھ گئیں۔

گذشتہ سال کے مقابلے میں رواں برس موٹرسائیکل چھیننے میں 11 فیصد،چوری میں 6فیصد اضافہ ہوا۔ سی پی ایل سی ریکارڈ کے مطابق رواں سال گاڑیاں چھیننے کے واقعات میں نمایاں کمی ہوئی، اس سال33 فیصد وارداتیں کم ہوئیں ۔سال 2021 کے چھ ماہ میں اسٹریٹ کرائم کی مجموعی طور پر 38ہزار 779وارداتیں رپورٹ ہوئی تھیں

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More