امریکا کا یوکرین کیلئے مزید 15 کروڑ فوجی امداد کا اعلان

واشنگٹن: امریکا نے یوکرین کے دفاع اور سلامتی کے لیے مزید 15 کروڑ ڈالر فوجی امدادی پیکج کا اعلان کر دیا۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق امریکی صدر جو بائیڈن نے فوجی امداد کے پیکج کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اس کے ذریعے یوکرین کو جنگی اسلحہ اور ریڈارز کے علاوہ دیگر ساز و سامان فراہم کیا جائے گا۔ جوبائیڈن نے کانگریس پر زور دیتے ہوئے کہا کہ یوکرین کے لیے مزید 33 ارب ڈالر کے امدادی پیکج کی منظوری دی جائے۔

امریکی وزیر خارجہ انٹونی بلنکن نے کہا کہ 24 فروری کو یوکرین پر حملے کے بعد سے امریکہ اب تک 3 ارب 80 کروڑ ڈالر کی مالیت کے ہتھیار کیف کو دے چکا ہے جس میں اینٹی ایئر کرافٹ اسٹنگر میزائل، ڈرونز اور بھاری اسلحہ شامل ہے۔ صدر جو بائیڈن نے ایک بیان میں کہا کہ امریکہ نے یوکرین کو انتہائی تیز رفتاری کے ساتھ تاریخی امداد فراہم کی ہے۔

امریکا نے یوکرین کی آزادی کے لیے اگلی صفوں میں لڑنے والوں کو براہ راست اسلحہ اور حربی ساز و سامان فراہم کیا جس کی کانگریس نے منظوری دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یوکرین کے لیے منظور شدہ فنڈز ختم ہونے کے قریب ہیں اور یوکرین کی جیت کے لیے انتہائی ضروری ہے کہ امریکہ اور اس کے اتحادی بغیر کسی تعطل کے اسلحہ کی ترسیل جاری رکھیں۔

اتوار کو یوکرین کے صدر ولودیمیر زیلنسکی ایک ورچوئل اجلاس میں شرکت کریں گے جس میں امریکی صدر جو بائیڈن کے علاوہ جی سیون ممالک کے سربراہان بھی شرکت کریں گے۔ اجلاس میں روس کے خلاف مغربی ممالک کی جانب سے فراہم ہونے والی امداد پر غور کیا جائے گا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More