عدالت اللہ اور پاکستان کے نام پر پارلیمنٹ کو بحال کرے

اسلام آباد: شہبازشریف نے سپریم کورٹ میں روسٹرم پر آتے ہوئے کہا کہ ہماری تاریخ میں آئین کئی بارپامال ہوا، جوبلنڈرہوئے ان کی توثیق اورسزانہ دیئے جانے کی وجہ سے یہ حال ہوا، عدالت اللہ اور پاکستان کے نام پر پارلیمنٹ کو بحال کرے۔

اسپیکر رولنگ کے خلاف از خود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران اٹارنی جنرل نے عدالت میں کہا کہ آج کوئی حکومت بھی بنا لے تو کتنی مستحکم ہو گی ، اپوزیشن سے تجاویز لے لیں، شہبازشریف بھی کمرہ عدالت میں موجود ہیں، موجودہ مینڈیٹ 2018کی اسمبلی کا ہے۔

شہبازشریف روسٹرم پر آ گئے اور کہا کہ عدالت کے سامنے پیش ہونامیرے لیے اعزازہے، عام آدمی ہوں،قانونی بات نہیں کروں گا، سپیکرکی رولنگ کالعدم ہو تو اسمبلی کی تحلیل ازخودختم ہوجائےگی، رولنگ ختم ہونے پرتحریک عدم اعتمادبحال ہوجائےگی، ہماری تاریخ میں آئین کئی بارپامال ہوا، جوبلنڈرہوئے ان کی توثیق اورسزانہ دیئے جانے کی وجہ سے یہ حال ہوا، عدالت اللہ اور پاکستان کے نام پر پارلیمنٹ کو بحال کرے، پارلیمنٹ کو عدم اعتماد پر ووٹ کرنے دیا جائے، دانستہ غلطیوں کو نظر انداز کیا گیا تو مستقبل میں بھی یہ عمل دہرایا جائے گا۔گزشتہ حکومت 174 ووٹوں پر قائم تھی ، ہمارے ممبر 177 ہیں، آئین کی بحالی اور عوام کیلئے اپنا خون پسینہ بہائیں گے۔

چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ 2013 کے الیکشن میں آپ کی کتنی نشستیں تھیں؟ ، شہباز شریف نے جواب دیا کہ گزشتہ انتخابات میں 150 سے زائد نشستیں تھیں۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More