تازہ ترین
کورونا ازخود نوٹس، کیس کی سماعت 8 جون کو ہوگی

کورونا ازخود نوٹس، کیس کی سماعت 8 جون کو ہوگی

اسلام آباد: (06 جون 2020) سپریم کورٹ میں کورونا وائرس ازخود نوٹس کیس کی سماعت 8جون کو ہوگی۔ سندھ اور خیبرپختونخوا کی حکومتوں نے اپنی اپنی رپورٹ عدالت عظمیٰ میں جمع کرادی۔ سندھ نے سینٹری اسٹاف کو تنخواہوں کی ادائیگی کی یقین دہانی کراتے ہوئے دعوی کیاکہ موثر اقدامات کے باعث کورونا وائرس سے متاثرہ مریضوں کی صحتیابی کی شرح میں اضافہ ہوگیا۔

کورونا وائرس ازخود نوٹس، سندھ اورخیبرپختونخواحکومتوں نے اپنی رپورٹس سپریم کورٹ میں جمع کرادیں، حکومت سندھ نے دعویٰ کیا کہ للکورونا وبا میں اضافہ کے باوجودمریضوں کی صحتیابی کا تناسب اکیس فیصد سے بڑھ کرانچاس فیصد ہو گیا۔ رپورٹ میں بتایا کہ تیرہ مئی سے تین جون کے درمیان کورونا مریضوں کی تعداد میں انیس ہزار کا اضافہ ہوا،اسی دوران سولہ ہزاربائیس مریض صحت یاب ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق فیلڈ آئیسولیشن سینٹرز اور اسپتالوں کی گنجائش بڑھانے کا منصوبہ ہے، آئی سی یو بیڈز کی گنجائش دوسو تین سے بڑھا کر دوسو چھبیس کردی ہے،اس وقت بھی سڑسٹھ آئی سی یو بیڈز خالی ہیں اورروزانہ کی ٹیسٹنگ گنجائش بڑھ کرآٹھ ہزارچھ سو پچاس تک پہنچ چکی ہے۔

رپورٹ میں سندھ حکومت نے بتایا کہ مریضوں کہ دیکھ بھال کیلئے اضافی ڈیڑھ ہزار ڈاکٹرز،2382 نرسز،500 ہیلتھ ٹینیکل کو بھرتی کیا گیا،طبی عملے کیلئے 15 دن کے حفاظتی سامان کا اسٹاک موجود ہے۔ سندھ حکومت نے سینٹری اسٹاف کو تنخواہوں کی ادائیگی کی بھی یقین دہانی کرادی۔ بتایا کہ وزیر اعلی ٰسندھ نے تنخواہوں کی ادائیگی کے لیے 140 ملین کی منظوری دے دی ہے جبکہ قابل ادا تنخواہوں کی ادائیگی کے لیے 239 ملین کی سمری بھیجی جا چکی ہے۔

آئندہ سماعت تک سینٹری ورکز کے تمام واجبات ادا کر دئیے جائیں گے جبکہ انہیں حفاظتی کٹس بھی فراہم کی جائیں گی۔ خیبرپختونخوا حکومت نے رپورٹ میں سپریم کورٹ کو بتایا کہ صوبے میں کررونا وائرس کی ٹیسٹنگ صلاحیت صرف 2 ہزار 860 ہے، سرکاری سطح پر روزانہ 1 ہزار 710 جبکہ پرائیوٹ لیبس روزانہ 1 ہزار 150 ٹیسٹ کررہی ہیں، خیبرپختونخواہ میں ابتک کل 11 ہزار 373 کیسز رپورٹ ہوچکے ہیں۔

Comments are closed.

Scroll To Top