تازہ ترین
کورونا وبا کے بعد مظلوم کشمیری دوہرا لاک ڈاؤن بھگت رہے ہیں، شاہ محمود قریشی

کورونا وبا کے بعد مظلوم کشمیری دوہرا لاک ڈاؤن بھگت رہے ہیں، شاہ محمود قریشی

اسلام آباد: (06 جون 2020) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ آج مقبوضہ جموں و کشمیر کے 80 لاکھ نہتے شہریوں کو کرفیو کے نام پر بھارتی استبداد کا سامنا کرتے دس ماہ گزر چکے ہیں ۔ کورونا وبا کے بعد مظلوم کشمیری دوہرا لاک ڈاؤن بھگت رہے ہیں ۔بھارت کی جانب سے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ مسلسل جاری ہے ہیں ۔ معصوم شہریوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے ، ہندوستان دانستہ طور پر خطے کا امن و امان تہہ و بالا کرنا چاہتا ہے ۔

وزارتِ خارجہ میں وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کی زیر صدارت سابقہ خارجہ سیکریٹریز کا مشاورتی اجلاس منعقد ہوا جس میں کورونا وباء کی صورتحال اور اس کے معاشی مضمرات، مقبوضہ جموں کشمیر میں جاری بھارتی جارحیت اور خطے میں امن و امان کی صورتحال پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔

اس موقع پر وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ کورونا عالمی وبائی چیلنج نے دنیا بھر کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے ،پاکستان جیسے ترقی پذیر ممالک کی معیشتوں پر اس وبا کے اثرات انتہائی شدید نوعیت کے ہیں ،کورونا وبائی صورت حال کے معاشی مضمرات سے نمٹنے اور ترقی پذیر ممالک کی معیشتوں کو سہارا دینے کیلئے وزیر اعظم عمران خان کی ڈیٹ ایلیف تجویز کو عالمی سطح پر پذیرائی مل رہی ہے ۔

شاہ محمود قریشی نے کہا کہ آج مقبوضہ جموں و کشمیر کے 80 لاکھ نہتے شہریوں کو کرفیو کے نام پر بھارتی استبداد کا سامنا کرتے دس ماہ گزر چکے ہیں ،کورونا وبا کے بعد مظلوم کشمیری دوہرا لاک ڈاؤن بھگت رہے ہیں ،بھارت کی جانب سے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزیوں کا سلسلہ مسلسل جاری ہے ہیں ،معصوم شہریوں کو نشانہ بنایا جا رہا ہے ،ہندوستان دانستہ طور پر خطے کا امن و امان تہہ و بالا کرنا چاہتا ہے ،عالمی برادری کو ہندوستان کے اس جارحانہ رویے کا فوری نوٹس لینا چاہئے۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ بھارت کی جانب سے مقبوضہ جموں و کشمیر میں ڈومیسائل قوانین میں ترمیم کے ذریعے، آبادیاتی تناسب کی تبدیلی کا قدم ،اقوام متحدہ سیکیورٹی کونسل کی قراردادوں اور بین الاقوامی قوانین کی صریحاً خلاف ورزی ہے،ہم نے سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ اور صدر سیکیورٹی کونسل کو بذریعہ خط ہندوستان کے ان عزائم سے آگاہ کر دیا ہے۔

وزیر خارجہ نے سابقہ خارجہ سیکریٹریز کو، صدر سیکورٹی کونسل کو لکھے گئے،اپنے حالیہ خط کے مندرجات سے آگاہ کیا۔ دوران اجلاس، افغان امن عمل ،خطے میں امن و امان کی مجموعی صورتحال سمیت اہم خارجہ پالیسی امور پر، مشاورت کی گئی ۔وزیر خارجہ نے، خارجہ پالیسی ترجیحات کے حوالے سے سابقہ خارجہ سیکریٹریز کی گراں قدر تجاویز پر، ان کا شکریہ ادا کیا۔

Comments are closed.

Scroll To Top