خیبرپختونخوا میں اومی کرون کیسز میں خطرناک حد تک اضافہ

پشاور: خیبر پختونخوا میں اومی کرون کے کیسز میں خطرناک حد تک اضافے کے بعد پشاور میں دو سرکاری دفاتر سمیت کئی مزید اسکولوں کو بند کردیا گیا جبکہ صوبائی حکومت نے ویکسی نیشن کے عمل کو مزید تیز کردیا ہے۔

پشاور سمیت خیبر پختونخوا میں اومی کرون میں خطرناک حد تک اضافے کے پیش نظر این سی او سی کے احکامات پر ڈائریکٹریٹ اسپیشل ایجوکیشن اور دو گرلز کالجوں سمیت کئی اسکولوں کو دس دس روز کیلئے بند کرنے کے احکامات جاری کر دیئے گئے۔

محکمہ صحت کی جانب سے جاری کردہ ہفتہ وار رپورٹ کے مطابق رواں ہفتے میں کیے جانے والے کورونا کے 80 ہزار سے زائد ٹیسٹ میں صوبے میں کورونا مثبت کیسز کی شرح 15 فیصد رہی۔

کورونا کے بڑھتے کیسز کے باعث ضلعی انتظامیہ کے افسران نے شہر بھر میں کارروائیاں کرتے ہوئے ایس او پیز کی خلاف ورزی پر 22 ریسٹورنٹس کو سیل کرکے منیجرز کو گرفتار کرلیا۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More