پاکستان کسی کیمپ پالیٹکس پر یقین نہیں رکھتا، آرمی چیف

اسلام آباد: آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کا کہنا ہے کہ پاکستان کسی کیمپ پالیٹکس پر یقین نہیں رکھتا۔پاکستان سب کے ساتھ مل کر چلنا چاہتا ہے۔

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے سیکیورٹی ڈائیلاگ کی تقریب سے خطاب میں کہا ہے کہ پاکستان یوکرین بحران کے حل کے لیے سیز فائر اور ڈائیلاگ پر یقین رکھتا ہے۔ پاکستان روس اور یوکرین کے درمیان جنگ بندی کا مطالبہ کر رہا ہے۔پاکستان کسی کیمپ پالیٹکس پر یقین نہیں رکھتا۔پاکستان سب کے ساتھ مل کر چلنا چاہتا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ بھارت کی طرف سے میزائل کا پاکستان میں گرنا انتہائی تشویش کا باعث ہے۔پاکستان نے بھارت کے میزائل گرنے کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ بھارت پاکستان اور دنیا کو بتائے کہ اس کے ایٹمی اثاثے محفوظ ہیں؟ ان کا کہنا ہے کہ پاکستان مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے ڈائیلاگ اور ڈپلومیسی پر یقین رکھتا ہے۔پاکستان چاہتا ہے بھارت کے ساتھ آبی تنازعہ بھی ڈائیلاگ اور ڈپلومیسی سے حل ہوں۔پاکستان مذاکرات پر یقین رکھتا ہے۔

انہوں نے کہا ہے کہ ہم نے دہشت گردی کے خلاف بڑی کامیابیاں حاصل کی ہیں۔ آخری دہشت گرد کے خاتمے تک کوشش جاری رہے گی۔پاکستان نے عالمی برادری سے مل کر افغانستان کی مدد کی۔ افغان عوام کی مدد کے لیے مزید کام کرنے کی ضرورت ہے۔ انکا کہنا ہے کہ یوکرین کے بحران کے باعث افغان عوام کو بھلایا نہ جائے۔پابندیاں لگانے کی بجائے افغانستان کے مثبت رویے کو بھی ملحوظ خاطر رکھا جائے۔دنیا کو افغانستان کودوبارہ دہشتگردی کے مرکز بننے سے روکنا ہوگا۔

انہوں نے کہا ہے کہ خطے کی سیکیورٹی اور استحکام ہماری پالیسی ہے۔ پاکستان اہم اقتصادی خطے میں واقع ہے۔پاکستان خطے کے مسائل کو شراکت داری سے حل کرنے پر گامزن ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ معیشت اور شہریوں کی سلامتی اہم ہے۔ شہریوں کی خوشحالی اور سلامتی ہماری ترجیح ہے۔مقاصد کے حصول کے لیے ملک کے اندر اور باہر امن کی ضرورت ہے۔خطے کو دہشتگردی، موسمیاتی تبدیلی اور غربت جیسے چیلنجز کا سامنا ہے۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More