واپڈا ملازمین کو ملنے والی مفت بجلی ختم کرنے کی ہدایت

اسلام آباد: پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے واپڈا ملازمین کو ملنے والے بجلی کے مفت یونٹس ختم کرنے کی ہدایت کردی جبکہ موٹر وے پر قائم ریسٹ ایریاز میں اشیا کی زائد قیمتوں پر فروخت کے معاملہ پر تمام چیف سیکرٹریز کو خط لکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

چیئرمین پی اے سی نے کے الیکٹرک کے سی ای او کی غیر حاضری پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ کراچی کے عوام مر رہے ہیں اور آپ پی اے سی کو سنجیدہ نہیں لے رہے۔

نورعالم خان کی زیرصدارت پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس ہوا، کمیٹی میں وزارت مواصلات کے آڈٹ پیراز کا جائزہ لیا گیا۔رکن کمیٹی شیخ روحیل اصغر نے کہا کہ این فائیو اور جی ٹی روڈ کی بری حالت ہے جبکہ پانچ جگہ ٹول ٹیکس دینا پڑتا ہے۔ چیئرمین کمیٹی بولے جی ٹی روڈ کا نام ڈیتھ روڈ رکھ دینا چاہیئے۔ موٹروے اور جی ٹی روڈ کی بہتر مرمت کی جائے موٹرویز پر بڑی تعداد میں ایکسیڈنٹ ہو رہے ہیں۔ ٹرک اور بسیں بھی فاسٹ ٹریک پر چل رہی ہوتی ہیں۔ بسوں اور ٹرکوں کو اپنی لائن میں چلنے کو یقینی بنائیں۔

چیئرمین کمیٹی نورعالم خان نے کہا کہ ریسٹ ایریاز میں پچاس روپے کی چیز سو روپے میں فروخت کی جاتی ہے۔سیکریٹری مواصلات کا کہنا تھا کہ ریسٹ ایریاز ٹک شاپس میں اشیا کی قیمتوں کو مانیٹر کرنا صوبائی حکومتوں کی ذمہ داری ہے۔ موٹروے کے لوگ کام نہیں کرتے غلط اوور ٹیکنگ پر چالان کریں، کمیٹی نے موٹروے پولیس میں افرادی قوت کی کمی کو پورا کرنے کیلئے نئی بھرتیوں کی ہدایت کر دی۔

پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے محکمہ بجلی کے تمام ملازمین کی مفت بجلی کی سہولت ختم کرنے کی ہدایت کردی۔ نور عالم خان بولے محکمہ بجلی کے ملازمین کے بچوں کو ملازمتوں میں ترجیح دی جائے مگر مفت بجلی کسی کو نہ دی جائے۔ پی اے سی اجلاس میں کے الیکٹرک حکام کی بھی سرزنش کرتے ہوئے الیکٹرک کے سی ای او کی غیر حاضری پر برہمی کااظہار کیا گیا۔

چیئرمین کمیٹی نور عالم خان نے کہا کہ سی ای او کے الیکٹرک آئندہ نہ آئے تو انہیں گرفتارکرکے لایا جائے۔ کراچی کے عوام مر رہے ہیں اور پی اے سی کو سنجیدہ نہیں لیا جارہا۔ پی اے سی نے ملک بھر میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے لوڈ شیڈنگ کا شیڈول جاری کرنے کی ہدایت کی ۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More