اب تک پاکستان تازہ ترین نیوز ٹکر پاکستان ہیڈ لائن

قومی اسمبلی اجلاس: عبادت گاہوں کی سیکیورٹی مزید سخت کرنے کا مطالبہ

اسلام آباد: (18 دسمبر 2017) قومی اسمبلی اجلاس میں سانحہ کوئٹہ کے سوگ میں ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی۔ خلیل جارج نے مرنے والوں کیلئے 50 لاکھ روپے فی کس، اقلیتی برادری کیلئے خصوصی فنڈ اور تمام چرچز کو کلاشنکوف لائسنس دینے کا مطالبہ کردیا ہے۔

قومی اسمبلی اجلاس میں کوئٹہ کے چرچ پر حملے کے سوگ میں ایک منٹ کی خاموشی اختیار کی گئی۔ ارکان نے دہشتگردی حملے کی مذمت کی۔ ملک بھر کی عبادت گاہوں کا تحفظ یقینی بنانے کا مطالبہ بھی کیا۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

وفاقی وزیر مذہبی امور و مذہبی ہم آہنگی سردار یوسف نے حملے کی مذمت کی۔ انہوں نے بتایا کہ حکومتی کوششوں سے دہشتگردی واقعات میں کمی آئی ہے۔ حملے میں 9 افراد جاں بحق اور 56 زخمی ہوئے ہیں۔

پارلیمانی سیکریٹری مذہبی ہم آہنگی خلیل جارج نے سانحہ کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے وزارت مذہبی امور کو سیکیورٹی کیلئے 10 کروڑ روپے فراہم کرنے اور تمام چرچز کو ایک ایک کلاشنکوف کا لائسنس دینے سمیت مرنے والوں کیلئے 50 لاکھ روپے فی خاندان امداد کا مطالبہ کیا ہے۔ایوان میں ارکان کی انتہائی کم حاضری رہی۔ اسپیکر نے اپوزیشن سے اپیل کی کہ کورم کی نشاندہی نہ کریں۔ جبکہ اپوزیشن نے اس دوران فاٹا اصلاحات بل میں تاخیر پر ایوان سے واک آؤٹ کیا۔

اس موقع پر شاہ جی گل آفریدی کی جانب سے کورم کی نشاندہی پر اجلاس ایک گھنٹہ تک ملتوی رہا۔ اجلاس دوبارہ شروع ہونے پر حکومت نے پاکستان توانائی و انفراسٹرکچر ترمیمی بل 2017ء اور قومی یونیورسٹی برائے ہنر مندی اسلام آباد بل 2017ء اپوزیشن کی غیر موجودگی میں کثرت رائے سے منظور کرلیے۔ایک مرتبہ پھر کورم ٹوٹنے پر ڈپٹی اسپیکر نے اجلاس منگل کی سہ پہر چار بجے تک ملتوی کردیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

مردم شماری کے عبوری نتائج پر حلقہ بندیوں کے لئے آئینی ترمیم درکار ہے، خورشیدشاہ

بھارت نے دوسری مرتبہ بلائنڈ ٹی ٹوئنٹی ورلڈکپ جیت لیا

 

Related posts

عوام کی مرضی کے بغیر جنگ میں کامیابی حاصل نہیں ہوسکتی، فردوس عاشق اعوان

faraz ahmed

عمان میں آکسیجن کی عدم فراہمی، 7 افراد جاں بحق، وزیرصحت مستعفی

Rauf Ansari

وزیراعظم نے وفاقی کابینہ کا اجلاس 5 جنوری کو طلب کرلیا

Hassam Alam

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More