بلوچستان عوامی پارٹی کے 4 ارکان کا اپوزیشن کی حمایت کا اعلان

اسلام آباد: بلوچستان عوامی پارٹی (بی اے پی) نے وزیر اعظم عمران خان کے خلاف تحریک عدم اعتماد پر اپوزیشن جماعتوں کا ساتھ دینے کا اعلان کردیا۔ بی اے پی کے چاروں ارکان وزیر اعظم عمران خان کے خلاف ووٹ دیں گے۔

متحدہ اپوزیشن کے رہنماؤں نے بلوچستان عوامی پارٹی کے ہمراہ مقامی ہوٹل میں پریس کانفرنس کی۔ پاکستان ڈیموکریٹک مومنٹ کے سربراہ مولانا فضل الرحمان، آصف زرداری، بلاول بھٹو اور باپ پارٹی کے رہنماوں کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب میں شریک چیئرمین پیپلز پارٹی آصف زرداری نے کہا کہ بلوچستان کی ہم پر بڑی مہربانی ہے۔ یہ میرے پاس آئے اور ہم نے ان سے ڈائیلاگ شروع کیا۔ بلوچستان ہے تو پاکستان ہے۔

انہوں نے اعلان کیا کہ جلد شہباز شریف کو وزیر اعظم بنائیں گے۔

شہباز شریف نے کہا کہ بلوچستان کے 4 ایم این ایز کے ہمارا ساتھ دینے کا فیصلہ کرنے پر شکریہ ادا کرتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ باپ نے بطور جماعت یہ فیصلہ کیا ہے۔ انہیں یقین دلاتے ہیں بلوچستان کے مسائل کے لئے ان کے ساتھ کام کریں گے۔ ان کے ساتھ بھرپور تعاون کریں گے۔

اس موقعے پر چیئر مین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ ہم نے کوئی غیر جمہوری آپشن نہیں اپنایا۔ ہماری جدوجہد جمہوریت کی بحالی ہے۔ ہم نے کنسنسس کے ساتھ مسائل کا حل کرنا ہے۔ ہم یہ کام اتحادیوں کے ساتھ مل کر کرنا چاہتے ہیں۔

مولانا فضل الرحمان نے بھی بلوچستان عوامی پارٹی کا اپوزیشن کا ساتھ دینے پر شکریہ ادا کیا۔

نیوز کانفرنس سے بی اے پی رہنما خالد مگسی نے بھی خطاب کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ تمام معاملات مشاورت کے ساتھ طے کیے گئے ہیں۔

تاہم بلوچستان عوامی پارٹی کی ایک رکن زبیدہ جلال نے تاحال اپوزیشن اتحاد میں شمولیت نہیں کی۔

ذرائع کے مطابق وزارت کی مصروفیات کے باعث زبیدہ جلال نے آج پریس کانفرنس میں شرکت نہیں کی۔ وفاقی وزیر زبیدہ جلال جلد ہی مستعفی ہوجائیں گی۔

ذرائع بی اے پی کے مطابق اگر زبیدہ جلال پارٹی فیصلے کے خلاف تحریک عدم اعتماد میں ووٹ دیا تو وہ اپنی نشست سے محروم ہو جائیں گی۔

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More