تازہ ترین
روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام کا ذمےدار میانمار کی فوج کو ٹھرایاجائے،امریکی سفیر

روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام کا ذمےدار میانمار کی فوج کو ٹھرایاجائے،امریکی سفیر

اقوام متحدہ(14فروری، 2018)امریکا نے میانمار کی جانب سے روہنگیا مسلمانوں کے قتل عام کی تردید کو احمقانہ قراردیتے ہوئے اقوام متحدہ پر زوردیاہے کہ میانمار کی فوج کو اس کا ذمے دارٹھہرایاجائے اور اس ملک کی رہنما آنگ سان سوچی پردباؤڈالاجائے کہ وہ اپنے ملک میں ہونے والے ہولناک عمل کو تسلیم کرے۔

سلامتی کونسل میں امریکی سفیر نکی ہیلے نے اپنے خطاب میں کہا میانمار حکومت میں موجود دطاقتورطاقتوں نے راخائن ریاست میں مسلمانوں کے قتل عام کی تردید کی ہے ۔

امریکی سفیر کا کہناتھا کہ برمی حکومت اپنی احمقانہ تردیدپر تضاد چھپانے کےلیے اقوام متحدہ سمیت ہرکسی کو رخائن ریاست میں اپنا ظلم وستم پر پردہ ڈالنے کےلیے جانے سے روک رہی ہے۔ہیلے نے رخائن میں قتل عام کی رپورٹنگ کرنے پر گرفتارہونے والے برطانوی خبررساں ایجنسی کےصحافی کی رہائی پر بھی زوردیا۔انھوں نے صحافی کی فوری اور غیرمشروط رہائی کا مطالبہ کیا۔ان کاکہناتھا کہ میانمارحکومت نے روہنگیا میں جاری مظالم دنیا پر آشکار کرنے پر ذرائع ابلاغ کو مورد الزام ٹھراتے ہوئے صحافی کو گرفتارکیاہے۔

اسی خبررساں ایجنسی نے گزشتہ ہفتے ایک رپورٹ چھاپی تھی جس میں ریاست رخائن کی این ڈن دیہات میں 10روہنگیائی مسلمانوں کو فوج اور ان کے پڑوسیوں کی جانب سے قتل کیے جانے کا احوال پیش کیاگیاتھا جنھیں بعد میں اجتماعی قبر میں دفن کردیاگیاتھا۔سلامتی کونسل میں فرانس کے سفیر فرانکوئیس ڈیلاٹری نے کہا خبررساں ایجنسی کی ریاست رخائن میں مسلمانوں کے قتل عام کے واقعات کی رپورٹ کے مطابق یہ انسانیت کے خلاف جرائم میں شمار کیے جاسکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے:

میانمارمیں اکتوبرمیں مسلمانوں کے 40 گاؤں جلاکر تباہ کیے گئے،ہیومن رائٹس واچ

مسلمانوں کا قتل عام :بین الاقومی این جی او نے میانمار حکومت کو بے نقاب کردیا

Comments are closed.

Scroll To Top