تازہ ترین
دو سال کے بچوں کو ٹی وی اسکرین سے دور رکھا جائے، تحقیق

دو سال کے بچوں کو ٹی وی اسکرین سے دور رکھا جائے، تحقیق

بچوں کو کس وقت اور کتنا وقت ٹی وی دیکھنا چاہے ا س پر کئی تحقیقات کی جا چکی ہیں تاہم ایک نئی تحقیق میں کہا گیا ہے کہ دوسال تک کے عمر کے بچوں کو ٹی وی دیکھنے کی اجازت نہیں ہونی چاہئے۔

امریکہ میں بچوں کے ادارے اکیڈمی آف پیڈریاٹکس (اے اے پی) کی ایک نئی تحقیق میں کہا گیا ہے کہ  دو سال تک کے بچوں کو ٹی وی اسکرین سے دور رکھا جانا چاہئے جبکہ اس سے قبل کی جانے والی تحقیق میں کہا گیا تھا کہ  دو سال سے کم عمر کے بچوں کا کوئی سکرین ٹائم نہیں ہوتا تاہم نئی تحقیق میں واضح کیا گیا ہے کہ 18 ماہ سے زیادہ عمر کے بچے اپنے اہل خانہ کے ساتھ ویڈیو چیٹ کر سکتے ہیں اور ڈیڑھ سال سے پانچ سال کی عمر کے بچے اپنے والدین کے ساتھ ہائی کوالٹی کے پروگرامز دیکھ سکتے ہیں۔

اے اے پی کی سربراہ مصنف جینی ریڈسکی کا اس نئی تحقیق کے بارے میں کہنا ہےکہ  والدین کو اپنے بچوں کے میڈیا کے استعمال کے بارے میں مثبت انداز میں ضرور سوچنا چاہیے اور اپنے بچوں سے بات کرنا چاہیے کیونکہ میڈيا کے حد سے زیادہ استعمال سے بچوں کو کھیلنے، پڑھنے، بات چیت کرنے یا سونے کے لیے خاطر خواہ وقت نہیں مل سکے گا۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ سب سے اہم بات یہ ہے کہ میڈیا کے استعمال کے متعلق والدین اپنے بچوں کے لیے رہنما کی حیثیت رکھتے ہیں یعنی انہیں ان کے مثبت استعمال سے آگاہ کرتے رہتے ہیں۔

اے اے پی نے سکرین کے استعمال کے متعلق میڈیا پلان تیار کرنے کا ایک طریقہ کار بھی وضع کیا ہے جس کے مطابق دو سے پانچ سال کے درمیان کے بچوں کو دن بھر میں ایک گھنٹے تک سکرین کے سامنے رکھا جا سکتا ہے اور بچوں کا خیال رکھنے والوں کو چاہیے کہ وہ ’میڈیا فری‘ وقت بنائیں۔

ماہر نفسیات اور ہاروڈ میں ریسرچ میں شامل ڈاکٹر کیتھرین سٹینر ایڈایئر نے اس تحقیق پر تبصرہ کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ئی گائیڈ لائنز کا خیر مقدم کرتی ہیں اور اس میں مزید وضاحت کی ضرورت ہے۔

Comments are closed.

Scroll To Top