تازہ ترین
میانمار مسلمانوں کی صورتحال پر سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس آج ہوگا

میانمار مسلمانوں کی صورتحال پر سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس آج ہوگا

ڈھاکہ: (13 ستمبر 2017) میانمار سے روہنگیا مسلمانوں کا انخلا جاری ہے اور بنگلہ دیش کاکس بازار میں پناہ گزینوں کی تعداد تین لاکھ ستر ہزار ہوگئی۔ بنگلادیش کی وزیراعظم شیخ حسینہ نے مطالبہ کیاہے کہ ینگون حکومت مسلمانوں کا قتل عام بند کرے جبکہ اقوام متحدہ کی امداد پہنچنا شروع ہوگئی ہے۔ مسلمانوں کی صورتحال پر سلامتی کونسل کا ہنگامی صورتحال آج ہوگا۔

میانمار میں بدھ بھکشوں اور فوج کی مسلمانوں کے خلاف مہم جاری ہے۔ گھروں کو آگ لگانے اور مزید مسلمانوں کو قتل کرنے کی اطلاعات ہیں جبکہ روہنگیا خواتین بچے، اور بزرگ کشتیوں اور جنگلوں میں چھپ کر بنگلادیش کی سرحد پر پہنچ رہے ہیں۔ اقوام متحدہ کے ترجمان کے مطابق بنگلادیش کے کاکس بازار کیمپ میں روہنگیا مسلمانوں کی تعداد تین لاکھ ستر ہزار ہوگئی۔ دو لاکھ خمیوں، کھانےاور روز مرہ کے دیگر اشیا سے محروم ہیں۔

بنگلادیش کی وزیراعظم شیخ حسینہ نے کاکس بازار کا دورہ کیا اور کیمپ میں روہنگیا مسلمانوں سے ملاقات کی۔ شیخ حسینہ نے میانمار حکومت پر زور دیاکہ وہ مسلمانوں کا قتل بند کرکے ان کیلئے سیف زون بنائے اور پناہ گزینوں کو واپس لے۔

امریکا اور چین نے میانمار میں امن و استحکام کیلئے حکومت کی کوششوں کی حمایت کی۔ بنگلادیش میں چار لاکھ روہنگیا مسلمان پہلے ہی آباد ہیں۔اب پناہ گزیں کی کل تعداد سات لاکھ ستر ہزار ہوگئی ہے۔ میانمار میں مسلمانوں کی صورتحال پر سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس آج بروز بدھ ہوگا۔

یہ بھی پڑھیے

میانمار: ہجرت کیلئے سرحد عبور کرتے ہوئے کئی مسلمان بارودی سرنگوں کا نشانہ بن گئے

میانمار میں روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی جاری

Comments are closed.

Scroll To Top