تازہ ترین
میانمار میں روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی جاری

میانمار میں روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی جاری

ریاض: (12 ستمبر 2017) میانمار میں بدھ بھکشؤں اور فوج کے مظالم سے بھاگ کر بنگلادیش میں آنے والے روہنگیا مسلمانوں کی تعداد تین لاکھ سے زائد ہوگئی ہے جبکہ انسانی حقوق کے لیے اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر زید بن رعد الحسین نے کہا ہے کہ میانمار میں روہنگیا مسلمانوں کو سیکیورٹی آپریشن میں نشانہ بنایا جانا ان کی نسل کشی کی واضح مثال ہے۔

عرب ٹی وی کے مطابق میانمار کے مختلف شہروں میں بدھ بھکشوں اور فوج کے ہاتھوں مسلمانوں کی نسل کشی جاری ہےلیکن پھر بھی کچھ مسلمان جان بچاکر جنگلوں کے ذریعے بنگلادیش کی سرحد پر پہنچ رہے ہیں۔اب تک تین لاکھ تیرہ ہزار روہنگیا مسلمان بنگلادیش پہنچ گئے ہیں۔ اقوام متحدہ نے چندہ دینے والے ممالک سے مدد کی اپیل کی۔ جینوا میں انسانی حقوق سے متعلق اقوام متحدہ کے کمیشن کے سربراہ زید رعد الحسین نے میانمار کی حکومت پر زور دیا کہ وہ ریاست رخائن میں جاری ظالمانہ ملٹری آپریشن کو ختم کرے۔

انہوں نے کہا کہ حالیہ آپریشن واضح طور پر غیر مناسب ہے۔میانمار نے انسانی حقوق کا جائزہ لینے والوں کو وہاں تک رسائی دینے سے انکار کیا ہے۔ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ اقوام متحدہ نے مختلف رپورٹس، سیٹلائیٹ سے لی گئی سکیورٹی فورسز اور لوکل ملیشیا کی تصاویر میں دیکھا جا سکتا ہے کہ وہ روہنگیا کے گاؤں کو آگ لگا رہے ہیں۔ ماورائے عدالت قتل کے مسلسل واقعات دیکھنے میں آئے اور ان میں بھاگتے ہوئے شہریوں کو گولی مارا جانا بھی شامل ہے۔ اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ میں میانمار حکومت سے مطالبہ کرتا ہوں کہ وہ حالیہ ملٹری آپریشن کو ختم کرے اور سب کے لیے احتساب ہو۔

یہ بھی پڑھیے

میانمار کے سفیر دفتر خارجہ طلب: احتجاجی مراسلہ حوالے کیا

میانمارمیں روہنگیا مسلمانوں کی نسل کشی جاری،عرب ٹی وی

Comments are closed.

Scroll To Top