تازہ ترین
ایٹم بم اور ہائیڈرو جن بم کے درمیان کیا فرق ہے

ایٹم بم اور ہائیڈرو جن بم کے درمیان کیا فرق ہے

aویب ڈیسک: (6 ستمبر 2017) شمالی کوریا نے بدھ کو ہائیڈروجن بم کے تجربے کا دعویٰ کیا۔ہائیڈروجن بم اور ایٹم بم میں آخر کیا فرق ہے۔

ایٹم بم اور ہائیڈرو جن بم دنیا کے دو بڑے ایٹمی ہتھیار جو سکینڈوں میں بے حد و حساب تباہی پھیلا سکتے ہیں۔ ایٹم بم سے بھلا کون واقف نہیں ہوگا یہی تو وہ بم تھا جو جاپانی شہروں ہیروشیما اور ناگاساکی پر امریکا نے برسائے تھے۔

ہائیڈروجن بم یا تھرمونیوکلئیر بم جدید اور خطرناک ہتھیار جو کہ طبعیات کے قانون فیوزن پر کام کرتا ہے۔ ہائیڈروجن بم میں دو نیوکلیائی اکائیاں مل کر ایک ہونے سے توانائی کا اخراج ہوتا ہے ۔ جس سے درجہ حرارت بڑھ جاتا ہے۔ سورج میں بھی یہ عمل ہو رہا ہے جس کی وجہ سے اس سے توانائی کا اخراج ہوتا ہے۔ اس بم کا پہلا تجربہ امریکا نے مارشل نامی جزائر پر انیس سو باون میں کیا جبکہ روس بھی انیس سو اکسٹھ میں اس کا تجربہ کرچکا ہے ۔ اب تک کسی بھی جنگ میں ہائیڈروجن بم استعمال نہیں کیا گیا۔

ایٹم بم طبعیات کے قانون نیو کلئیرفشن پر کام کرتے ہیں۔ جس میں یورنیم کا ایٹم ایک سے زیادہ ذرات میں تقسیم ہو کر بڑے پیمانے پر توانائی کا اخراج کرتا ہے ۔ انیس سو پنتالیس میں امریکا نے ایٹم بم کا تجربہ پہلی بار نیو میکسیکو میں کیا تھا۔ جس کے فوری بعد امریکا نے یورنیم کو بطور ایندھن استعمال کرتے ہوئے ایٹمی ہتھیار کے ذریعے جاپانی شہروں ہیروشیما اور ناگاساکی پر اسے گرایا تھا۔ جس کے نتیجے میں لاکھوں افراد پلک جھپکتے میں موت کی آغوش میں جا سوئے۔ روس بھی ایٹم بم کا تجربہ انیس سو انچاس میں قازقستان کے صحرا میں کرچکا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

یوٹیوب نے پوری ویب سائٹ کو نئے انداز میں پیش کردیا

واٹس ایپ کا کاروباری صارفین کیلئے نئی سہولت متعارف کرانے کا اعلان

 

Comments are closed.

Scroll To Top