تازہ ترین
زینب کیس: ملزم کا زینب سمیت 9 بچیوں کو قتل کرنے کا اعتراف

زینب کیس: ملزم کا زینب سمیت 9 بچیوں کو قتل کرنے کا اعتراف

لاہور: (13 فروری 2018) زینب قتل کیس کے ملزم عمران نے اقرار جرم کرلیا ہے، سفاک قاتل کا کہنا تھا کہ چھوٹی بچیوں کا انتخاب اس لیے کرتا تھا کہ انہیں بہلا پھسلا کر آسانی سے کہیں بھی لیجایا جا سکتا تھا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور کے کوٹ لکھپت جیل میں زینب قتل کیس کی سماعت ہوئی،انسداددہشت گردی عدالت کے جج سجاد احمد نے سماعت کی۔

اس موقع پر سفاک ملزم نے نھنی زینب سمیت نو بچیوں کو اپنی حوس کا نشانہ بنانے کا اعتراف کیا، جس پر جج نے ملزم کو چالیس منٹ کے بعد دوبارہ بیان دینے کا وقت دیا، ساتھ ہی جج نے ملزم کو اپنے وکیل سے مشاورت کرنے کی ہدایت کی۔چالیس منٹ وقفے کے بعد سماعت کا دوبارہ آغاز ہوا تو ملزم عمران نے اپنے موقف پر قائم رہتے ہوئے دوبارہ اقرار جرم کیا، جس پر عدالت نے پراسکیوشن کو عمران کا اعترافی بیان ریکارڈ کرنے کا حکم دیا۔

ذرائع کے مطابق سفاک قاتل کے گناہوں کی فہرست مرتب کرنے میں چار گھنٹے لگے، اس دوران عدالت نے پراسکیوشن کو گواہان کی شہادیں قلمبند کرنے کے ساھ ساتھ مجرم کے وکیل کو جراح جاری رکھنے کی ہدایت بھی کی۔ٹرائل کے دوران درندے صفت ملزم نے بتایا کہ چھوٹی بچیوں کا انتخاب اس لیے کرتا تھا کہ انہیں بہلا پھسلا کر آسانی سے کہیں بھی لیجایا جاسکتا تھا

یاد رہے گزشتہ روز انسداد دہشت گردی کی عدالت نے معصوم زینب کو ذیادتی کے بعد قتل کرنے والے سفاک ملزم عمران پر فرد جرم عائد کی تھی۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

دوران سماعت پراسیکیوٹر جنرل نے عدالت کے روبرو دلائل دیئے ، اے ٹی سی کے جج سجاد احمد نے دلائل سننے کے بعد ملزم پر فرد جرم عائد کردی،اس کے بعد ملزم کےخلاف باقاعدہ جیل ٹرائل کا آغاز ہو گیا ہے۔واضح رہے کہ سکیورٹی خدشات کے باعث ملزم کیخلاف کوٹ لکھپت جیل میں مقدمے کی سماعت ہوئی ،فرد جرم عائد ہونے کے بعد ملزم کیخلاف جیل ٹرائل کا آغاز کیا گیا۔

اس سے قبل اب تک نیوز نے زینب کے سفاک قاتل کےچالان کی کاپی حاصل کی، چالان کے مطابق زینب کے قاتل کیخلاف محکمہ پراسکیوشن چھپن گواہان پیش کرے گا۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

چالان میں ملزم کےکپٹروں سمیت ننھی زینب کاسویٹر بھی شامل کیا گیا ہے جبکہ زینب کے پوسٹ مارٹم رپورٹ کوبھی چالان کاحصہ بنایاگیاہے جو قصور اسپتال کی ڈاکٹر قرۃ العین نے کیا تھا۔

چالان کے مطابق ننھی زینب کوزیادتی وبدفعلی کانشانہ بنایاگیا جبکہ ٹیسٹ میں جسمانی خدوخال کےمطابق عمران علی کو ہی زینب کااصل ملزم قرار دیاگیا، چالان میں کوڑےکےڈھیرسےزینب کی لاش کی پانچ تصاویرکو بھی شامل کیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

زینب قتل کیس:سپریم کورٹ نے ازخود نوٹس نمٹادیا

 

 

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top