تازہ ترین
دہری شہریت کیس کا فیصلہ محفوظ

دہری شہریت کیس کا فیصلہ محفوظ

اسلام آباد: (24 ستمبر 2018) سپریم کورٹ نے سرکاری افسران اور ججز کی دہری شہریت سے متعلق کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا ہے، چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ جو لوگ پاکستان کو دھوکہ دے کر گئے اور باہر جا کر جائیدادیں بنائیں ان کیلئے کوئی گنجائش نہیں ہے۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے سرکاری افسران اور ججز کی دہری شہریت سے متعلق کیس کی سماعت کی، دوران سماعت عدالتی معاون نے بتایا کہ دوہزار دو سے ابتک نادرا نے دہری شہریت کے حامل کسی شخص کی پاکستانی شہریت منسوخ نہیں کی۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ جو لوگ پاکستان کو دھوکہ دے کر گئے اور باہر جا کر جائیدادیں بنائی ان کے لئے کوئی گنجائش نہیں ہے،چھٹی لیکر بیرون ملک ملازمت کرنے والوں کے خلاف قانون سازی ہونی چاہیے۔

چیف جسٹس کا اپنے ریمارکس میں کہنا تھا کہ پاکستان کیلئے بدنامی کا باعث بننے والوں کو معاف نہیں کریں گے، جبکہ جسٹس عمر عطا بندیال نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ دہری شہریت رکھنے کا ایک پہلو یہ ہے کہ اس سے ملک کے ساتھ وفاداری تقسیم ہوجاتی ہے۔افواج پاکستان نے بھی تحریری جواب میں اگاہ کیا ہے کہ دوہری شہریت کا حامل شخص بھرتی نہیں ہو سکتا،لیکن اس کا دوسرا پہلو یہ ہے کہ ڈاکٹرزاوراستاد کی دہری شہریت پر کوئی عذر نہیں ہونا چاہیے، بلکہ گردے کے ماہر ڈاکٹر اور ٹیچرز کی دہری شہریت ہو تو اس کی حوصلہ افزائی ہونی چاہیے،بعدازاں عدالت نے ججز اور سرکاری افسران کی دہری شہریت سے متعلق کیس کا فیصلہ محفوظ کرلیا۔

گذشتہ سماعت پر ڈی جی ایف آئی اے نے انکشاف کیا تھا کہ دوہری شہریت سے متعلق کیس میں ایک سو اکیاون سرکاری افسران نے اپنی شہریت چھپائی ہے،ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن نے عدالت میں بتایا کہ 152 افسران نے دہری شہریت چھپائی، 18 مارچ تک ایک لاکھ 82 ہزار 90 افسران کا ڈیٹا اکٹھا کیا، 36 ہزار مزید افسران کا ڈیٹا موصول ہوا ہے، ایک لاکھ 50 ہزار 933 افسران کا ڈیٹا جانچا گیا، جن میں سے 655 افسران نے خود دہری شہریت کا اعتراف کیا۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

بشیر میمن نے بتایا کہ عدنان محمود، مینہ، شرجیل مرتضیٰ سمیت 5 افسران کی غیرملکی شہریت ہے، مراکش میں تعینات پاکستانی سفیر بھی دہری شہریت کے حامل ہیں۔ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن کے مطابق 152 افسران نے دہری شہریت چھپائی، 665 افسران کی بیگمات دہری شہریت کی حامل ہیں، 82 افسران کی بیگمات غیرملکی شہری ہیں، 254 افسران خود دہری شہریت رکھتے ہیں مگربیگمات پاکستانی ہیں، 321 افسران بیگمات سمیت دہری شہریت کے حامل ہیں۔چیف جسٹس نے کہا کہ پاکستان کا 19 ممالک کے ساتھ دہری شہریت کا معاہدہ ہے، شناختی کارڈ تو دھوکے سے بھی بن جاتے ہیں، مینہ کھرل پاکستانی شہری نہیں تو جاکر جرمنی میں کام کریں، غیر ملکی سفیر پاکستان کے مفاد میں کیسے کام کرے گا، جوعدالت کو سچ نہیں بتائے گا معطل کردیں گے، سرکاری افسران سے سچ چھپانے کی توقع نہیں، جھوٹ بول کر سرکاری نوکری کرنے والے دھوکے باز ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

وزارتِ داخلہ میں دہری شہریت کے افسران کو حساس عہدوں سے ہٹانے کا حکم

سپریم کورٹ نے دُہری شہریت سے متعلق رپورٹ 15 روز میں طلب کرلی

 

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top