تازہ ترین
سپریم کورٹ کا آئی جی سندھ کو برقرار رکھنے کا حکم

سپریم کورٹ کا آئی جی سندھ کو برقرار رکھنے کا حکم

اسلام آباد:(18جنوری 2018) سپریم کورٹ نے اے ڈی خواجہ کو آئی جی سندھ برقرار رکھنے کا حکم دیتے ہوئے سندھ ہائی کورٹ کے فیصلے کیخلاف صوبائی حکومت کی اپیل منظور کر لی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ نے اے ڈی خواجہ کو عہدے پر برقرار رکھنے کے سندھ ہائیکورٹ کے فیصلے کے خلاف صوبائی حکومت کی اپیل سماعت کیلئے منظور کر لی ہے، چیف جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ آئی جی سندھ کی تقرری کا معاملہ صوبائی حکومت کی اپیل پر فیصلے سے مشروط ہوگا۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

دوران سماعت سندھ حکومت کے وکیل فاروق ایچ نائیک نے موقف اپنایا کہ سندھ ہائیکورٹ نے پولیس ایکٹ 2011 کو آئینی قرار دیتے ہوئے اے ڈی خواجہ کو پولیس میں تبادلوں کا اختیار بھی دے دیا ہے۔

عدالت عالیہ نے وہ فیصلہ دیا ہے جو درخواست نے مانگا ہی نہیں ہے، جس پر چیف جسٹس ثاقب نثار نے سندھ ہائیکورٹ کے فیصلے کی تعریف کرتےہوئے کہا کہ یہ فیصلہ بہت خوبصورت اور دو تین بار پڑھنے کے لائق ہے۔واضح رہے کہ دس جنوری کو وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت ہونے والے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں موجودہ آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کو تبدیل کرکے ان کی جگہ سردار عبد المجید دستی کو نیا آئی جی مقرر کرنے کی منظوری دی تھی۔

وفاقی کابینہ نے گذشتہ اجلاس میں سندھ حکومت سے گریڈ 22 کے افسران کا پینل طلب کیا تھا اور تجاویز مانگی تھیں جس پر صوبائی حکومت نے آئی جی سندھ کیلئے تین نام بھجوائے تھے،سندھ حکومت کی فہرست میں سردار عبد المجید دستی کا نام بھی دیا گیا تھا، جسے وفاقی کابینہ نے منظور کرلیا ہے۔

جبکہ چھ جنوری کو بھی اسٹیبلشمنٹ ڈویژن نے سردار عبدالمجید کو اللہ ڈ ینو خواجہ کی جگہ پر آئی جی سندھ تعینات کرنے کی سفارش کی تھی، اس سے پہلے سندھ کابینہ بھی سردار عبدالمجید کے نام کی منظوری دے چکی تھی۔یاد رہے کہ گزشتہ سال اٹھائیس نومبر کو سندھ کی صوبائی کابینہ نے آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کو ہٹانے کی منظوری دیتے ہوئے سردار عبدالمجید ستی کو صوبے کا نیا آئی جی بنانے کا فیصلہ کیا تھا۔

اجلاس کے دوران کابینہ کو بتایا گیا تھا کہ مارچ سولہ میں اے ڈی خواجہ کو او پی ایس پر آئی جی لایا گیا، سپریم کورٹ نے تمام او پی ایس پر پوسٹنگز ختم کردی ہیں اس لئے سندھ حکومت اے ڈی خواجہ کی خدمات وفاق کو واپس کرے۔وزرا کمیٹی نے گریڈ ایک سے اکیس تک کے ٹرانسفر اور پوسٹنگ اختیارات آئی جی سندھ کے پاس ہونے کی مخالفت بھی کی جبکہ پولیس ریفارمز کے متعلق آئی جی سندھ کی جانب سے پیش کی گئی تمام سفارشات کو بھی مسترد کیا گیا تھا۔

یہ بھی پڑھیے

صوبائی کابینہ نے آئی جی سندھ کو ہٹانے کی منظوری دےدی

اے ڈی خواجہ نے 7 جولائی کے بعد ہونے والی تمام پوسٹنگ اور ٹرانسفر منسوخ کردیئے

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top