تازہ ترین
سپریم کورٹ کا کراچی میں واٹر ٹینکروں کے ذریعے پانی کی فراہمی بند کرنے کا حکم

سپریم کورٹ کا کراچی میں واٹر ٹینکروں کے ذریعے پانی کی فراہمی بند کرنے کا حکم

کراچی (14جنوری، 2018)سپریم کورٹ نے کراچی میں واٹر ٹینکروں کے ذریعے پانی کی فراہمی بند کرنے کا حکم دیدیاہے اپنے ریمارکس میں چیف جسٹس نے کہا اگرواٹر ٹینکرز مالکان ہڑتال کریں تو ہمیں ان سے نمٹنا آتا ہے۔

سپریم کورٹ کراچی رجسٹری چیف جسٹس ثاقب نثار کے سربراہی میں تین رکنی بینچ نے سمندری آلودگی اور مضر صحت پانی کی فراہمی سے متعلق کیس کی سماعت کی ۔ بینچ کے دیگر2 ججوں میں جسٹس فیصل عرب اور جسٹس سجاد علی شاہ شامل ہیں۔

کیس کے دوران چیف جسٹس نے کہا ٹینکروں سے سپلائی کا مطلب ہے پانی موجود ہے ۔ایم ڈی واٹربورڈ  کو مخاطب کرتے ہوئے چیف جسٹس نے کہا عدالت کو رپورٹس میں نہ الجھایا جائے پانی ہر گھر کی ضرورت ہے،ہمیں ڈیڈ لائن دیں کہ آلودہ پانی کا مسئلہ کب حل ہوگا،سیوریج کا پانی ٹریٹ کرکے کب چھوڑا جائے گا۔

چیف جسٹس نے ایم ڈی واٹر بورڈ سے پوچھا اگرشہر میں پانی نہیں ہے تو ستعمال میں آنے والاپانی ٹینکرزسے کیوں پوراہورہا ہے؟چیف جسٹس نے کہا واٹر ٹینکر مافیا بن گئی ہے۔

ایم ڈی واٹربورڈ  ہاشم رضازیدی نے عدالت کو آگاہ کیا بہت سے علاقے کچی آبادیاں ہےجن میں لائنیں نہیں ہیں ۔اس پر چیف جسٹس نے استفسار کیاکہ باتھ آئی لینڈ کہا ہے جس پر ایم ڈی واٹر بورڈ نے بتایا باتھ آئی لینڈ میں بھی لائنیں نہیں ہیں۔

ویڈیودیکھنے کےلیےپلے کابٹن دبائیں

ایم ڈی واٹر بورڈ کاکہناتھا کہ اس حوالے سے ایڈوکیٹ جنرل سندھ کو آگاہ کردیاہے۔

سماعت کے موقع پر سابق ایڈمنسٹریٹر کے ایم سی فہیم الزماں نے عدالت کو بتایا اس وقت شہر میں 150سے زائد ہائیڈرنٹس چل رہے ہیں۔عدالت نے اس کیس میں میئر کراچی وسیم اختر کو بھی طلب کرلیا ہے جبکہ سابق جسٹس امیر ہانی مسلم کو واٹر کمیشن کا نیا سربراہ مقرر کردیا گیاہے۔انھیں سپریم کورٹ کے جج کے مساوی اختیارات حاصل ہوں گے۔

اس سے پہلے واٹر کمیشن جسٹس اقبال کلہوڑو کی سربراہی میں بنایاگیاتھا۔ جنھوں نے کمیشن سے دستبردار ہونے کیلئے عدالت سے درخواست کی تھی۔

عدالت میں پیشی کے بعد میئر کراچی کی میڈیا سے گفتگو

میئرکراچی وسیم اختر عدالتی حکم پر سپریم کورٹ میں پیش ہوئے، عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ چیف جسٹس کے نوٹس کے بعد لگتا ہے کراچی کے مسائل حل ہونے والے ہیں۔

میئرکاکہناتھا کہ ہرجگہ غیر قانونی ہائیڈرنٹس لگے ہیں پیسے سے خرید کر پانی پینا پڑ رہا ہے، ٹینکر مافیا سے پورا کراچی واقف ہے ۔

انھوں نےکہا سارا کچرا سیوریج نظام میں آتا ہے، نالوں پرقبضے ہوچکے ہیں جبکہ بجلی کنڈوں پر چل رہی ہے۔

ان کاکہناتھا کہ میونسپل کارپوریشن کے معاملات صوبائی حکومت چلارہی ہے، کل سے ایک ٹیم بنا کر مسائل کے حل کے لیے کام کریں گے،ایک ہفتہ میں رپورٹ چیف جسٹس کو جمع کراؤں گا۔

میئر کراچی نے بتایا چیف جسٹس نے میرے اختیارات کے بارے میں پوچھا۔

یہ بھی پڑھیے:

ہائیکورٹ 90 روز میں کیسز کے فیصلے کرے، چیف جسٹس ثاقب نثار

انصاف میں تاخیر معاشرے کا بڑا مسئلہ ہے، چیف جسٹس پاکستان

Comments are closed.

Scroll To Top