تازہ ترین
میڈیکل کالجز کی انسپیکشن کے لئے 5 رکنی کمیٹی قائم

میڈیکل کالجز کی انسپیکشن کے لئے 5 رکنی کمیٹی قائم

کراچی: (13 جنوری 2018) سپریم کورٹ نے نجی میڈیکل کالجز کو اپنے معاملات 15 دن میں ٹھیک کرنے کا حکم دیتے ہوئے نجی میڈیکل کالجز کی انسپیکشن کے لئے پانچ رکنی کمیٹی بنادی ہے۔

ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں نجی میڈیکل کالجوں میں داخلوں کے معیارسے متعلق کیس کی سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثار نے نجی کالج مالکان کو پندرہ دن کے اندر اندر معاملات ٹھیک کرنے کی ہدایت کی ہے۔دوران سماعت چیف جسٹس آف پاکستان نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ آپ التجا سمجھیں، بڑے بھائی کی بات سمجھیں یا حکم ،انسپکشن ٹیم جائے گی تو پھر کوئی رعایت نہیں ملے گی۔دوران سماعت چیف جسٹس ثاقب نثار نے سیکرٹری صحت سے استفسارکیا کہ بتائیں قریب ترین نجی میڈیکل کالج، ہسپتال کون سا ہے؟،ہم آج کسی ایک نجی میڈیکل کالج کا دورہ کریں گے ، ساتھ ہی آپ کو بھی ایک فارم دے رہے ہیں،اس پر مکمل تفصیلات لکھ کر جمع کرائیں۔

اس سے قبل سپریم کورٹ نے انتظامیہ کو ملک بھر میں وی آئی پی موومنٹ کے دوران سڑکیں بند کرنے سے روکنے کا حکم جاری کیا۔

ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

سماعت کے موقع پر ایڈیشنل چیف سیکرٹری سندھ ، آئی جی سندھ، ڈی آئی جی ٹریفک اور ایڈیشنل آئی جی مشتاق مہر بھی عدالت میں پیش ہوئے۔

اس موقع پر چیف جسٹس نے آئی جی سندھ سے کہا کہ خواجہ صاحب بتائیں کہ شہریوں کے حقوق کیا ہیں؟، سڑکوں کو بند کرنے سے متعلق شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے، جس پر آئی جی سندھ نے کہا وی وی آئی پیز کے لیے قوانین موجود ہیں۔دوران سماعت چیف جسٹس نے کہا کہ آئی جی صاحب میں بھی تو وہ وی آئی پی ہوں، میرے لیے تو سڑک بلاک نہیں ہوتی، جس پر اے ڈی خواجہ نے وضاحت پیش کرتے ہوئے کہا کہ کہیں سڑکیں بند نہیں کی جاتی، صرف موومنٹ کے لیے انتظامات کیے جاتے ہیں اور دو منٹ کے لیے ٹریفک روک دیا جاتا ہے۔

جس پر جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ وی وی آئی پی موومنٹ سیاسی رہنماؤں کی ہو یا کسی اور کی، شہریوں کو تکلیف سے بچایا جائے۔بعد ازاں سپریم کورٹ نے حکم دیا کہ کہیں بھی کسی وی وی آئی پی کیلئےسڑکیں بند نہ کی جائیں اور شاہین کمپلیکس سے آرٹس کونسل تک جانے والی سڑک کو بھی کھولا جائے ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ کسی بھی شخصیت کیلئےدو منٹ سےزیادہ سڑک بند نہ کی جائے، ہم عوام کی پریشانی نہیں دیکھ سکتے۔

یہ بھی پڑھیے

نااہلی کے فیصلے پر جہانگیرترین نے نظرثانی کی درخواست دائرکردی

جہانگیر ترین تاحیات نا اہل قرار

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top