تازہ ترین
سوار محمد حسین شہید (نشان حیدر) کی آج سینتالیسویں برسی

سوار محمد حسین شہید (نشان حیدر) کی آج سینتالیسویں برسی

اسلام آباد: (10 دسمبر 2018) انیس سو اکہترکی جنگ میں وطن کی خاطرجان قربان کرنیوالے سوار محمد حسین نشان حیدر کی آج سیتالیس ویں برسی ہے۔ صرف بائیس سال کی عمر میں وطن عزیز کی خاطر جان کا نذرانہ پیش کرنیوالے سوار محمد حسین شہید کے یوم شہادت پر دیکھتے ہیں۔

10 دسمبر 1971کی شام کا سورج ڈوبنے کے قریب تھا مکار دشمن کی بندوقیں گولیاں اگل رہی تھیں۔ دوسری طرف پاک فوج کا بہادر سپوت دشمن کو بھاری نقصان پہنچا چکا تھا۔یہ ذکر ہے پاک وطن پر جان قربان کرنے والے سوار محمد حسین شہید کا۔ جون انیس سو انچاس کو ضلع راولپنڈی کی تحصیل گوجر خان کے گاؤں ڈھوک پیر بخش میں پیدا ہونے والے محمد حسین نے تین ستمبر انیس سو چھیاسٹھ میں صرف سترہ برس کی عمر میں پاک فوج میں شمولیت اختیار کی۔ بطور ڈرائیور فوج میں بھرتی ہوئے لیکن شوق شہادت نے عملی جنگ میں حصہ لینے پر مجبور کر دیا۔5دسمبر انیس سو اکہتر میں پاک بھارت جنگ میں سوار محمد حسین شہید شکرگڑھ کے محاذ پر دشمن کی گولہ باری کی پرواہ کیے بغیر خندق میں موجود اپنے ساتھیوں کو گولہ بارود پہنچاتے رہے وہ خود بھی ٹینک شکن توپوں کے پاس جا کر دشمن کے ٹھکانوں کی نشاندہی کرتے تھے جس کے باعث دشمن کے سولہ ٹینک تباہ ہوئے دس دسمبر 1971 کو سوار محمد حسین دشمن کی گولیوں کا نشانہ بن گئے۔دشمن کی ناپاک عزائم کے پاک دھرتی پر قدم رکھنے کی خواہش سوار محمد حسین شہید اور ان جیسے کئی بہادر سپوتوں نے نہ صرف چکنا چور کیا بلکہ ان کو الٹے پاؤں بھاگنے پر بھی مجبور کیا۔

جرات اور بہادری کے اس بے مثال مظاہرے پر محمد حسین شہید کو اعلی ترین اعزاز نشان حیدر سے نوازا گیا۔ سوار محمد حسین شہید پاک فوج کا سب سے بڑا اعزاز نشان حیدر حاصل کرنے والے پہلے سپاہی تھے۔

Comments are closed.

Scroll To Top