تازہ ترین
سعودی ولی عہد  2روزہ دورے پر آج اسلام آباد پہنچ رہے ہیں

سعودی ولی عہد 2روزہ دورے پر آج اسلام آباد پہنچ رہے ہیں

اسلام آباد:(17 فروری 2019) سعودی ولی عہد محمد بن سلمان پاکستان کے دو روزہ دورے پر آج اسلام آباد پہنچ رہے ہیں،سعودی ولی عہد کے شاندار استقبال کی تمام تر تیاریاں مکمل کرلی گئی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق سعودی ولی عہد کا طیارہ پاکستانی حدود میں داخل ہوتے ہی جے ایف سیونٹین تھنڈر طیارے پروٹوکول دیں گے ،نور خان ایئر بیس پر سعودی ولی عہد کو اکیس توپوں کی سلامی دی جائے گی ، اس کے علاوہ وزیراعظم عمران خان کابینہ سمیت ایئرپورٹ پر سعودی شہزادے کا پرتپاک استقبال کریں گے۔

ٹرپل ون بریگیڈ سعودی ولی عہد اوران کے وفد کی سیکیورٹی کے فرائض سرانجام دے گا،رینجرزاوربم ڈسپوزل اسکواڈ بھی سیکیورٹی ٹیم کاحصہ ہوں گے،اس کے علاوہ پولیس اور رینجرز کے دوہزارسے زائداہلکاربھی اسلام آباد میں تعینات ہوں گے۔

وزارت داخلہ کے ذرائع نے ابتک نیوز کوبتایا کہ سعودی وفد کی سیکیورٹی کے لیے چار سطح پرمشتمل سیکیورٹی پلان ترتیب دیاگیاہے، پہلاحصاراسلام آباد پولیس، دوسرا رینجرز،تیسرافوج کے اہلکاروں جبکہ چوتھاحصارایک سوتئیس رائل سعودی گارڈز کا ہوگاجوپاکستان پہنچ چکے ہیں۔

دوسی ون تھرٹی طیاروں میں سات بی ایم ڈبلیوز، ایک ٹیوٹالینڈ کروزسمیت سعودی ولی عہد کاذاتی سامان پہنچ چکاہے،رائل فیملی کے لیے تین سوپراڈوگاڑیاں پہلے ہی بک ہیں، سعودی وفدکیلئے مختص اسلام آباد کے آٹھ ہوٹلوں کی نگرانی بھی سعودی رائل گارڈزکریں گے۔پاکستان کے حساس اداروں نے بھی سیکیورٹی کلیئرنس کے لیے ان ہوٹلوں کے انتظامات سنبھال لیے ہیں۔

سعودی ولی عہد کی آمدسے قبل سیکیورٹی ٹیموں کی جانب سے ریہرسل کی جائے گی، وفاقی دارالحکومت میں ڈرون کیمرے اڑانے پر پابندی عائد کردی گئی ہے،جبکہ ریڈزون کومکمل طورپرسیل کیا جارہا ہے،اس کے علاوہ موبائل فون سروس بھی جزوی بندجبکہ میٹروبس سروس راولپنڈی تک محدود رہے گی۔

لاہوراورپشاورسے آنے والی ٹریفک کوایکسپریس وے استعمال نہیں کرنے دی جائے گی،فیض آبادسے راول ڈیم چوک اور کشمیرچوک تک سڑک ٹریفک کے لیے بندرہے گی۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے جڑواں شہروں میں سیکڑوں چوکیاں قائم کردی ہیں۔

اپنے دورے میں ولی عہد محمد بن سلمان صدر پاکستان سے ملاقا ت کریں گے،وہ وزیراعظم اور آرمی چیف سے بھی ملاقاتیں کریں گے،توقع ہے کہ ولی عہد محمد بن سلمان کے دورے سے دونوں ملکوں کے درمیان تعاون کے تمام شعبوں میں دوطرفہ تعلقات کو مزید فروغ ملے گا۔

 وزیراعظم ہاؤس میں وزیراعظم عمران خان اور سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کے درمیان ون آن ون ملاقات ہوگی، اس موقع پر وزیراعظم سعودی ولی عہد کے اعزاز میں ظہرانہ جبکہ صدر مملکت عارف علوی ایوان صدر میں عشائیہ دیں گے۔

ادھر سعودی عرب کے وزرا کی کونسل نے پاکستان اور دیگر ایشیائی ملکوں کے ساتھ تعلقات مضبوط بنانے کا فیصلہ کیا ہے۔کابینہ نے توانائی، صنعت اورقدرتی وسائل کے وزرا یا انکے نائبین کو اختیار دیا ہے کہ وہ قابل تجدید توانائی کے منصوبوں کی تعمیر پیٹروکیمیکل اور ناکارہ اشیا کو دوبارہ استعمال میں لانے اور معدنی وسائل کے شعبوں میں سرمایہ کاری کے حوالے سے پاکستان کے ساتھ مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط کرسکتے ہیں۔

کابینہ نے سعودی عرب کے سیاحت اور قومی ورثے کے کمیشن کے سربراہ کو نوادرات اور میوزیم کے شعبوں میں تعاون کی یادداشت پر دستخط کرنے کابھی اختیار دیا ہے۔

دوسری جانب سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کی سیکیورٹی کیلئے پولیس رینجرز اور انسداد دہشتگردی فورس کے دستے تعینات کئے جائیں گے، جس کے لئے انٹیلی جنس ادارے سعودی ولی عہد کی آمد سے متعلق اپنی رپورٹس ارسال کرچکے ہیں، اس کے علاوہ سعودی ولی عہد کے ساتھ آنیوالے مہمانوں کی قیام گاہوں کی سیکیورٹی بھی انتہائی سخت ہوگی۔ولی عہد کی آمد سے دو روز قبل سیکیورٹی ریہرسل بھی کی جائےگی۔

یاد رہے کہ اپریل 2017 میں ولی عہد کا عہدہ سنبھالنے کے بعد کسی اعلیٰ سعودی شخصیت کا یہ پاکستان کا پہلا دورہ ہوگا،ولی عہد محمد بن سلمان وزرا کی کونسل کے نائب صدر اوروزیر دفاع سمیت حکومت کے اہم عہدوں پر فائز ہیں۔

Comments are closed.

Scroll To Top