تازہ ترین
وزیر اعلیٰ بلوچستان کے لئے جوڑ توڑ عروج پر

وزیر اعلیٰ بلوچستان کے لئے جوڑ توڑ عروج پر

کوئٹہ: (10 جنوری 2018) بلوچستان کے نئے وزیراعلیٰ کے لیے جوڑ توڑ شروع ہوگئی جبکہ مسلم لیگ (ن) کی جانب سے بھی دو نام سامنے آگئے ۔

تفصیلات کے مطابق بلوچستان کے نئے وزیراعلیٰ کے انتخاب کیلئے ملاقاتیں اور جوڑ توڑ عروج پر ہیں ، اسپیکر بلوچستان اسمبلی نے قائدایوان بلوچستان کے انتخاب کے لئے اجلاس بلانے کا مراسلہ گورنر بلوچستان کو بھجوا دیا ہے، جہاں اپوزیشن اور اتحادی جماعتیں اپنا اپنا وزیراعلیٰ نامزد کرینگے۔

اتحادی جماعت میں مسلم لیگ (ن) ، مسلم لیگ (ق) ، جمعیت علماء اسلام (ف) ،بی این پی ، بی این پی عوامی ، عوامی نیشنل پارٹی اور مجلس وحدت المسلمین شامل ہے جبکہ اپوزیشن جماعت میں نیشنل پارٹی اور پشتونخواء میپ ہونگے۔ذرائع کے مطابق اتحادی جماعت اپنے قائد ایوان کے لئے ، نوابزادہ چنگیز مری ،میر جان محمد جمالی ،سردار صالح محمو بھوتانی ،میر سرفراز بگٹی اور نوابزادہ طارق مگسی کے ناموں پر غور کرے گی جبکہ اپوزیشن بھی اپنا وزیراعلیٰ نامزد کرے گا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور مسلم لیگ (ن) کے صدر نواز شریف کے درمیان ملاقات کے دوران فیصلہ کیا گیا تھا کہ اگر وزیراعلیٰ بلوچستان کے لئے اپوزیشن جماعتیں برتری ثابت کرنے میں کامیاب ہوئیں تو وزارت اعلیٰ کے لئے انہیں پیشکش کی جائے گی۔وزیراعظم اور نواز شریف کے درمیان ہونے والی ملاقات میں اسمبلی توڑنے کے خدشات کا بھی اظہار کیا گیا، مسلم لیگ (ن) کی جانب سے وزیراعلیٰ کے لئے سردار صالح بھوتانی اور جان محمد جمالی کے نام سامنے آئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

وزیراعلیٰ بلوچستان ثناءاللہ زہری نے استعفیٰ دے دیا

شاہد خاقان عباسی کا وزیراعلیٰ بلوچستان کو مستعفی ہونے کا مشورہ،ذرائع

Comments are closed.

Scroll To Top