تازہ ترین
سابق صدر آصف زرداری کے کاغذات نامزدگی منظور

سابق صدر آصف زرداری کے کاغذات نامزدگی منظور

نواب شاہ: (19 جون 2018) سابق صدر اور شریک چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی آصف زرداری کے کاغذات نامزدگی منظور کرلئے گئے، ان پر کاغذات نامزدگی میں زرعی زمین چھپانے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق سابق صدر کے خلاف ترقی پسند پارٹی کے امیدوار کی جانب سے اعتراضات عائد کئے گئے تھے، درخواست گزار کی جانب سے مؤقف اختیار کیا گیا تھا کہ آصف زرداری نے کرپشن کی ہے اور زمینوں پر ٹیکس جمع نہیں کرایا۔

ویڈیو دیکھنے کے لیے پلے کا بٹن دبائیے

بعد ازاں اعتراض کنندہ رضا محمد دھاریجو کی جانب سے ریٹرننگ افسر کو بتایا گیا کہ اعتراضات غلط فہمی پر دائر کیے گئے تھے،آصف زرداری نے زرعی ٹیکس ادا کیا ہے۔

جس پر ریٹرننگ افسر کی جانب سے اعتراض کنندہ سے کہا گیا کہ آپ نے غلط درخواست دے کر قیمتی وقت ضائع کیا، کیوں نہ آپ کو جیل بھیج دیا جائے، جس پر درخواست گزار نے معافی مانگ لی، بعدازاں ریٹرنگ افسر نے محبوب اعوان نے این اے 213 نواب شاہ پر شریک چیئرمین آصف زرداری کے کاغذات نامزدگی کو درست قرار دے دیا۔

اس سے قبل ریٹرنگ افسر نے چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کے این 131 سے کاغذات نامزدگی منظور ہوئے تھے۔

ویڈیو دیکھنے کے لیے پلے کا بٹن دبائیے

بعد ازاں آر او نے جانچ پڑتال کے بعد جسٹس اینڈ ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار کے اعتراضات کو مسترد کرتے ہوئے عمران خان کے کاغذات نامزدگی منظور کرلئے۔

گذشتہ روز پی ٹی آئی سربراہ عمران خان نے این اے 53 میں جمع کرائے گئے کاغذات نامزدگی پر اٹھائے جانے والے اعتراضات کے جوابات بذریعہ وکیل جمع کرائے تھے۔

اعتراضات جسٹس اینڈ ڈیموکریٹک پارٹی کے امیدوار کی جانب سے اٹھائےگئے تھے،عمران خان کی جگہ بابر اعوان کے معاون وکیل نے تحریری جواب ریٹرننگ آفیسر کو جمع کرایا جس میں کہا گیا تھا کہ عمران خان کے خلاف اعتراضات بے بنیاد ہیں۔

تحریری جواب کے مطابق عمران خان پر لگائے گئے اعتراضات الزامات ہیں جو جھوٹ پر مبنی، من گھڑت اور غیر تصدیق شدہ ہیں،عمران خان پر لگائے گئے اعتراضات فوٹو اسٹیٹ کاغذات پر مشتمل اور غیر تصدیق شدہ ہیں جو جعل سازی کے زمرے میں آتے ہیں۔

تحریری جواب کے مطابق بیرون ملک سے کاغذات منگوانے اور بھجوانے کا قانونی طریقہ کار موجود ہے۔

واضح رہے کہ پی ٹی آئی چیئرمین عمران خان کے کاغذات نامزدگی پر عبدالوہاب بلوچ نے اعتراضات دائر کر رکھے ہیں، اس لیے عمران خان کو کاغذات کی جانچ پڑتال کے ساتھ اعتراضات کا جواب دینا ہوگا۔

حلقہ این اے 53 سے 63 امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائے ہیں جن میں عمران خان، شاہد خاقان عباسی اور عائشہ گلالئی کے علاوہ مسلم لیگ (ن) کے بیرسٹر ظفر اللہ، مہتاب عباسی اور پی ٹی آئی کے الیاس مہربان بھی شامل ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

الیکشن کمیشن نے انتخابی فہرستوں کا ڈیٹا لیک ہونے پر نادرا سے وضاحت طلب کرلی

پی ٹی آئی کا نواز شریف اور وکلاء پر تاخیری حربے استعمال کرنے کا الزام

Comments are closed.

Scroll To Top