تازہ ترین
راؤ انوار نے نظرثانی درخواست سپریم کورٹ میں جمع کرادی

راؤ انوار نے نظرثانی درخواست سپریم کورٹ میں جمع کرادی

اسلام آباد: (14 فروری 2019) راؤ انوار نے نظر ثانی درخواست سپریم کورٹ میں جمع کرادی۔ درخواست میں استدعا کی گئی ہے نقیب اللہ محسود قتل کیس میں میرا عمل دخل ابھی تک ثابت نہیں ہوا، اس وجہ سے میری نقل و حرکت پر پابندی بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ ای سی ایل سے نام نکالا جائے۔

راؤ انوار نے نظرثانی درخواست سپریم کورٹ میں جمع کرادی ہے۔ سپریم کورٹ کے 10 جنوری کے حکم نامے کے خلاف دائر نظرثانی درخواست میں راؤ انوار نے موقف اپنایا ہے کہ سپریم کورٹ نے اپنے حکم میں انصاف کے تقاضوں کو نظر اندز کیا۔ ایف آئی آر کا اندراج یا زیرالتواء مقدمہ نقل و حرکت کے حق ختم نہیں کر سکت۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ عدالت کے عبوری حکم میں قانونی نکات کو مد نظر نہیں رکھا گیا جس سے ٹرائل کورٹ میں شفاف ٹرائل کے حق کا تحفظ نہیں ہوگا۔ عدالت نے ای سی ایل سے نام نکالنے والی درخواست میں کئی پہلوئوں کو نظر انداز کیا۔ میں ایک والد ہوں، ذمہ داریاں نبھانا فرض ہے۔ اس پہلو کو بھی حکم نامے میں نظر انداز کیا گیا۔

درخواست میں راؤ انوار نے کہا کہ نقیب اللہ محسود قتل کیس میں میرا عمل دخل ابھی تک ثابت نہیں ہوا، اس وجہ سے میری نقل حرکت پر پابندی بنیادی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ میری زندگی کو بیشتر خطرات لاحق ہیں۔ پاکستان میں آزادی سے سفر نہیں کرسکتا۔

درخواست میں راؤ انوار نے عدالت سے استدعا کی ہے کہ سپریم کورٹ 10 جنوری کے حکم نامے پر نظر ثانی کرتے ہوئے ای سی ایل سے نام خارج کرے۔

Comments are closed.

Scroll To Top