تازہ ترین
پنجاب حکومت کی جانب سے  سانحہ ماڈل ٹاؤن کی رپورٹ کو پبلک کرنے خلاف انٹرا کورٹ اپیل دائر

پنجاب حکومت کی جانب سے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی رپورٹ کو پبلک کرنے خلاف انٹرا کورٹ اپیل دائر

لاہور: (22ستمبر،2017) پنجاب حکومت نے سانحہ ماڈل ٹاون کی رپورٹ منظر عام پر لانے کے فیصلے کو چیلنج کردیا ہے ۔

ویڈیودیکھنے کےلیے پلے کابٹن دبائیں

تفصیلات کے مطابق عدالت عالیہ میں انٹرا کورٹ اپیل ہوم سیکرٹری پنجاب نے دائر کی، اپیل میں مؤقف اختیار کیا گیا ہے کہ رپورٹ پبلک کرنے سے متعلق درخواستیں فل بینچ کے روبرو زیرسماعت ہیں،فل بینچ کی موجودگی میں سنگل بینچ کیس کی سماعت نہیں کر سکتا۔

پنجاب حکومت کی جانب سے دائر درخواست میں اعتراض اٹھایا گیا ہے کہ فاضل سنگل بینچ نے تحریری جواب جمع کروانے کا موقع ہی نہیں دیا جبکہ آئینی درخواست میں تحریری جواب سنے بغیر ہی فیصلہ جاری کیا گیا ہےدرخواست گزار کا کہنا ہے کہ جوڈیشل انکوائری پبلک کرنا یا نہ کرنا حکومت کاصوابدیدی اختیار ہے، ہوم سیکرٹری پنجاب نے لاہور ہائیکورٹ سے استدعا کی ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کی انکوائری رپورٹ پبلک کرنے سے متعلق سنگل بینچ کا فیصلہ کالعدم قرار دیا جائے۔

اس سے قبل لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے سانحہ ماڈل ٹاؤن پر جسٹس باقر نجفی جوڈیشل کمیشن کی رپورٹ منظر عام پر لانے کے حکم کے بعد پنجاب حکومت کی سرکردہ شخصیات ،اعلیٰ سرکاری افسروں اور قانونی ماہرین کا اجلاس ہوا تھا۔

ذرائع کے مطابق اس اہم اجلاس میں قانونی ماہرین نے لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے حوالے سے اعلیٰ حکام کو نہ صرف آگاہ کیا بلکہ آئندہ کے حوالے سے بھی لائحہ عمل بارے بریفنگ دی ۔بعد ازاں پنجاب حکومت نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی انکوائری رپورٹ پبلک کرنے کے عدالتی حکم کو چیلنج کیا ، پنجاب حکومت کی جانب سے ہائیکورٹ کے سنگل بینچ کے فیصلے کے خلاف انٹرا کورٹ اپیل دائر کی گئی۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز لاہور ہائی کورٹ نے سانحہ ماڈل ٹاؤن کی جوڈیشل انکوائری رپورٹ منظرعام پر لانے کا حکم دیا تھا، عدالت کا کہنا تھا کہ انصاف کے تقاضے پورے کرنے کے لئے جسٹس باقر نجفی رپورٹ کو عام کیا جائے۔

یہ بھی پڑھئے

لاہور: سانحہ ماڈل ٹاؤن، شہبازشریف نےتاریخ کا بدترین قتل عام کروایا، طاہرالقادری

لاہور ہائی کورٹ کا سانحہ ماڈل ٹاؤن انکوائری رپورٹ منظرعام پر لانے کا حکم

Comments are closed.

Scroll To Top