تازہ ترین
پنجاب اسمبلی نے آب پاک اتھارٹی بل کثرت رائے سے منظور کرلیا

پنجاب اسمبلی نے آب پاک اتھارٹی بل کثرت رائے سے منظور کرلیا

لاہور: (14 مارچ 2019) پنجاب اسمبلی نے آب پاک اتھارٹی بل کثرت رائے سے منظور کر کے گورنر پنجاب کو سربراہ بنا دیا ہے۔ اپوزیشن کے تمام اعتراضات مسترد کردیئے گئے۔ مسلم لیگ (ن) نے بل کو ہائیکورٹ میں چیلنج کرنے کا اعلان کردیا۔

پنجاب اسمبلی کا اجلاس مقررہ وقت پر شروع کرنے کی گونج تو رہی مگر عملدرآمد نہ ہوسکا۔ اجلاس دو گھنٹے دس منٹ کی تاخیر سے اسپیکر چوہدری پرویز الہیٰ کی زیر صدارت شروع ہوا تو حکومت نے آب پاک اتھارٹی بل ایوان میں پیش کیا۔ جس پر مسلم لیگ (ن) کی جانب سے شدید اعتراضات کیے گئے۔

مسلم لیگ (ن) نے اتھارٹی کا چیف ایگزیکٹو گورنر پنجاب کو بنانے کی مخالفت کرتے ہوئے اسے صوبائی معاملات میں مداخلت قرار دے دیا۔

مسلم لیگ (ن) کے اعتراضات پر صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت نے کہا کہ بل کا مقصد صوبے کی عوام کو صاف پانی مہیا کرنا ہے۔ گورنر صوبے کی تمام یونیورسٹیز کے وائس چانسلر لگا سکتے ہیں تو اتھارٹی کے چیف ایگزیکٹو کیوں نہیں ہوسکتے۔

مسلم لیگ (ن) اعتراضات مسترد ہونے پر ایوان سے واک آؤٹ کرگئی جس کے بعد آب پاک اتھارٹ بل کو منظور کیا گیا۔

ایجنڈا مکمل ہونے پر اسپیکر چوہدری پرویز الہیٰ نے پنجاب اسمبلی کا اجلاس غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کردیا۔

Comments are closed.

Scroll To Top