تازہ ترین
پاکستان نے کلبھوشن یادیو سے متعلق بھارت کا بیان مسترد کردیا

پاکستان نے کلبھوشن یادیو سے متعلق بھارت کا بیان مسترد کردیا

اسلام آباد: (02 جولائی 2017) پاکستان نے کلبھوشن یادیو کو قونصلر رسائی دینے سے متعلق بھارت کا بیان مسترد کردیا ہے۔ ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ کلبھوشن کے معاملے کو سول قیدیوں کے ساتھ نہیں جوڑا جاسکتا۔ کلبھوشن بھارتی بحریہ کا حاضر سروس افسر اور’’را‘‘ کا ایجنٹ ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کلبھوشن یادیو کے معاملے پر بھارتی وزارت خارجہ کے بیان پر کہا ہے کہ پاکستان بھارت کے ساتھ 2008 کے قیدیوں تک قونصلر رسائی کے معاہدے پر اس کی روح کے مطابق عمل کررہا ہے۔ کلبھوشن کوعام قیدی سمجھنا حقائق کو جھٹلانے کی بھارتی کوشش ہے۔ کلبھوشن بھارتی بحریہ کا حاضر سروس افسر اور’’را‘‘ کا ایجنٹ ہے۔جسے ’’را‘‘ نے دہشتگردی اور جاسوسی کیلئے پاکستان بھیجا۔ کلبھوشن کی سرگرمیوں سے پاکستانی شہریوں کی جانوں اور مال کو نقصان پہنچا، اور اس نے اپنے جرائم کا اعتراف بھی کیا ہے۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

ترجمان نے کہا کہ بھارت نے تاحال 107 پاکستانی ماہی گیروں اور 85 شہریوں تک قونصلر رسائی نہیں دی۔ سزا پوری کرنے والے 20 پاکستانی سول قیدی تاحال بھارت سے واپسی کے منتظر ہیں۔ جولائی 2016 میں غلطی سے سرحد پار کرنے والے 2 کمسن پاکستانیوں کو سال بعد واپس کیا گیا۔ بھارت کی جانب سے پاکستانی مریضوں کے میڈیکل ویزوں پر شرائط عائد کرنا بھی انسانی ہمدردی کے دعوؤں کی نفی ہے۔ انسانی ہمدردی کے معاملات سیاسی حالات کے باعث یرغمال نہیں بنائے جا سکتے۔

یہ بھی پڑھیے

حق خودارادیت کو دہشت گردی قرار دینا ناانصافی ہے، نفیس زکریا

افغانستان کے ساتھ بارڈر مینیجمنٹ ناگزیر ہے، نفیس زکریا

 

Comments are closed.

Scroll To Top