تازہ ترین
کرتارپور راہداری مذاکرات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی

کرتارپور راہداری مذاکرات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی

اسلام آباد: (14 مارچ 2019) کرتارپور راہداری مذاکرات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی۔ ذرائع کے مطابق مذاکرات میں دونوں ممالک کے درمیان چند نکات پر اختلاف موجود ہے جس میں سب سے اہم یاتریوں کی تعداد کا معاملہ ہے۔

ذرائع کے مطابق مذاکرات میں دونوں ممالک کے درمیان چند نکات پر اختلاف موجود ہے۔ پاکستان کی جانب سے بھارت روزانہ کی بنیاد پر پانچ سو سکھ یاتریوں کی کرتارپور صاحب آمد کی پیشکش کی گئی ہے تاہم بھارت روزانہ کی بنیاد پر پانچ ہزار سکھ یاتریوں کی آمد پر بضد ہے۔ پاکستان نے موقف اختیار کیا ہے کہ اتنی بڑی تعداد میں روزانہ کی بنیاد پر انتظامات میں دشواریاں ہوسکتی ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ دونوں ممالک کے درمیان اختلاف کا دوسرا نکتہ ٹرانسپورٹیشن ہے۔ پاکستان کے مطابق سکھ یاتری بسوں میں روزانہ کرتارپور صاحب آسکتے ہیں تاہم بھارت سکھ یاتریوں کے پیدل کرتارپور صاحب جانے کا خواہاں ہے۔

بھارت کی جانب سے مطالبہ کیا گیا ہے کہ پاکستان سکھوں کے علاوہ ہندو اور دیگر مذاہب کے افراد کو بھی کرتارپور آنے کی اجازت دے، جس پر پاکستان نے موقف اختیار کیا ہے کہ کرتارپور صاحب صرف اور صرف سکھوں کیلئے کھولا جا رہا ہے۔ دونوں ممالک کے درمیان کرتارپور راہداری کو کسی قسم کے سیاسی مقاصد کیلئے استعمال نہ کرنے پر اتفاق کیا گیا ہے۔

Comments are closed.

Scroll To Top