تازہ ترین
بلیک فرائیڈے کے خلاف اپوزیشن کا پنجاب اسمبلی سے واک آوٹ

بلیک فرائیڈے کے خلاف اپوزیشن کا پنجاب اسمبلی سے واک آوٹ

لاہور: (24 نومبر 2017) پنجاب اسمبلی میں عقیدہ ختم نبوت کو نصاب کا حصہ بنانے قراردار متفقہ طور پر منظور کرلی ہے جبکہ بلیک فرائیڈے کے خلاف اپوزیشن نے احتجاج کرتے ہوئے اسمبلی سے واک آوٹ کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب اسمبلی کا اجلاس رانا محمد اقبال کی زیر صدارت ہوا، اس موقع پر حکومتی رکن وحید گل نے عقیدہ ختم نبوت کو نصاب کا حصہ بنانے کی قرارداد ایوان میں پیش کی، قرار داد کے متن کے مطابق عقیدہ ختم نبوت کا دفاع ہمارے ایمان کا حصہ ہے اور آئین پاکستان نے اس عقیدے کو مکمل تحفظ فراہم کیا ہے۔قرار داد کے متن میں تحریر ہے کہ مسلمان طلبہ و طالبات کے لئے عقیدہ ختم نبوت کا مضمون لازمی قرار دیا جائے اور صوبائی و وفاقی حکومت اس حوالے سے فوری اقدامات کرے۔

بعد ازاں عقیدہ ختم نبوت کو نصاب کا حصہ بنانے کے لیے پنجاب اسمبلی نے قرار داد کو متفقہ طور پر منظور کیا، اس موقع پر حکومتی اور اپوزیشن جماعتوں کے ارکان نے مشترکہ طور پر بلیک فرائیڈے کے بچت بازاروں کے خلاف شدید احتجاج کیاپنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید کا کہنا تھا کہ جمعہ کا دن مسلمانوں کے لئے مقدس ہے لہذٰا بلیک فرائیڈے پر پابندی عائد کرکے اس ایونٹ کو منانے والوں کو مجرم تصور کرتے ہوئے کارروائی کی جائے، بعد ازاں اسمبلی کی کارروائی نماز جمعے کے باعث دو بجے تک ملتوی کردی گئی۔

یہ بھی پڑھئے

انتخابی اصطلاحات کا بل لاہور ہائی کورٹ میں چیلنج

روہنگیا مسلمانوں پر ظلم کے خلاف پنجاب اسمبلی میں بھی قرار داد جمع

Comments are closed.

Scroll To Top