تازہ ترین
سرینگر:کشمیریوں کی نسل کشی، مقبوضہ وادی میں شٹر ڈاؤن

سرینگر:کشمیریوں کی نسل کشی، مقبوضہ وادی میں شٹر ڈاؤن

سرینگر: (14 جنوری 2018) مقبوضہ وادی میں کشمیریوں کی نسل کشی اور انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے خلاف شٹر ڈاؤن رہا۔ ہزاروں افراد نے بھارتی مظالم کے خلاف مظاہرے کئے اور جھڑپوں میں متعدد مظاہرین زخمی ہوگئے۔ قابض فوج نے حریت قیادت کو نظربند اور یاسین ملک کو تھانے میں بند کردیا۔

حریت مزاحمتی فورم کی اپیل پر مقبوضہ جموں، کشمیر اور لداخ میں تمام کاروبار اور اسکول بند رہے۔ سرکاری دفاتر میں حاضری نہ ہونے کے برابر رہی۔ ہزاروں افراد کشمیریوں کی نسل کشی کے خلاف مقبوضہ سرینگر اور دیگر اضلاع میں مظاہرے کئے اور بھارت سے آزادی کے نعرے لگائے۔ قابض فوج سے جھڑپوں میں متعدد مظاہرین زخمی ہوگئے۔

بھارتی فوج نے رات بارہ بجے سے ہی حریت مزاحمتی فورم کے چیئرمین میرواعظ عمرفاروق،دختران ملک کی چیئرپرسن آسیہ اندرابی اور دیگر کو گھروں میں نظر بند کردیا تھا۔ یاسین ملک کو گرفتار کرکے تھانے منتقل کردیا۔ قابض فوج نے مظاہرے روکنے کیلئے روڈ بند کرنے کے ساتھ ٹرین اور موبائل سروس بھی بند کردی۔

یہ بھی پڑھیے

مقبوضہ کشمیر میں شٹر ڈاؤن ہڑتال

مقبوضہ کشمیر: بھارت کی ریاستی دہشتگردی میں مزید 2 کشمیری شہید

Comments are closed.

Scroll To Top