تازہ ترین
نادرا نے آر ٹی ایس سے متعلق رپورٹ جمع کرادی

نادرا نے آر ٹی ایس سے متعلق رپورٹ جمع کرادی

اسلام آباد:(11ستمبر 2018) عام انتخابات دوہزار اٹھارہ میں رزلٹ ٹرانسمیشن سسٹم ( آر ٹی ایس )فیل ہونے سے متعلق نادرا نے ابتدائی رپورٹ مرتب کرکے الیکشن کمیشن کو بھجوا دی ہے جب کہ الیکشن کمیشن نے بھی نادرا کی جانب سے موصول ہونے والی رپورٹ کی تصدیق کردی ہے۔

رپورٹ کے مطابق آرٹی ایس پچیس جولائی کو ٹھیک کام کررہا تھا، اور عام انتخابات کے روز شام چھ بجے سے ستائیس جولائی شام چار بجے تک آرٹی ایس سے نتائج موصولی کا عمل جاری رہا، اس کے لئے نادرا نے آر ٹی ایس کا بین الاقوامی معیار کا بیک اپ تیار کیا تھا، جبکہ رزلٹ ٹرانسمیشن سسٹم اور رزلٹ مینجمنٹ سسٹم میں کوئی مماثلت نہیں تھی۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبایئے

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ آر ٹی ایس میں ڈیٹا فیڈ کرنے کا اختیار صرف پریذائیڈنگ اور اسسٹنٹ پریذائیڈنگ افسران کو تھا، ابتدا میں آر ٹی ایس کے ذریعے رزلٹ کی آمد جاری تھی، انتخابی عملے کو آرٹی ایس سافٹ ویئر کے استعمال کرنے میں مختلف وجوہات رکاوٹ کا باعث بنیں۔

رپورٹ میں انکشاف ہوا ہے کہ تھری جی انٹرنیٹ کی عدم دستیابی بھی رزلٹ فارم کی آرٹی ایس ترسیل میں بڑی رکاوٹ رہی، بیشتر پریذائیڈنگ اور اسسٹنٹ پریذائیڈنگ افسران ٹیکنالوجی کے استعمال کی مہارت نہیں رکھتے تھے اور ان کے پاس اسمارٹ فون بھی دستیاب نہیں تھے،۔پریذائیڈنگ افسران کی اسمارٹ فون سے لاعلمی، موبائل چارجنگ کے مسائل اور انٹرنیٹ ڈیٹا پیکجز نہ ہونے کے باعث نتائج آر ٹی ایس کے ذریعے ارسال نہ کیے جاسکے۔

رپورٹ کے مطابق الیکشن کمیشن کی رات دو بجے سے قبل غیرحتمی اور غیر سرکاری نتائج کا دباؤ بھی ناکامی کا سبب بنا رہا، رات دو بجے کی ڈیڈ لائن کے لیے الیکشن کمیشن نے آر ٹی ایس کو بائی پاس کرنے کے احکامات جاری کیے، آر ٹی ایس کا بالواسطہ یا بلاواسطہ کوئی تعلق نہیں تھا کہ وہ کسی حلقے کے نتائج مرتب کرے۔یاد رہے کہ پچیس اگست کو تحریک انصاف نے الیکشن کے روز رزلٹ ٹرانسمیشن سسٹم (آر ٹی ایس) کی بندش کی تحقیقات مکمل کرتے ہوئے آر ٹی ایس سسٹم کی ناکامی کا ذمہ دار نادرا کو ٹھہرا یا تھا اور اس کی ناکامی میں ملوث افراد کے خلاف کارروائی کی بھی سفارش کی تھی۔

تحقیقاتی کمیٹی کا کہنا تھا کہ الیکشن کے صاف شفاف ہونے کے سارے ثبوت موجود ہیں تاہم کمیٹی نے سفارش کی ہے کہ آر ٹی ایس کی ناکامی کا فارنزک آڈٹ کرایا جائے۔ذرائع کے مطابق تحریک انصاف سینیٹ میں پارلیمانی رہنما اعظم سواتی و دیگر پر مشتمل آر ٹی آیس شٹ ڈاؤن معاملے کی نگرانی کے لیے تحققیقاتی کمیٹی قائم کی تھی، سینیٹر اعظم سواتی کل وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کریں گے جس کے دوران وہ آر ٹی ایس نظام کی ناکامی کی تحقیقاتی رپورٹ پر انہیں بریفنگ دیں گے۔

دوسری جانب عام انتخابات کے دوران رزلٹ ٹرانسمیشن سسٹم ناکام ہونے کی تحقیقات کیلئے کمیٹی 22 روز بعد بھی تشکیل نہیں دی جا سکی ہے، کابینہ ڈویژن اور الیکشن کمیشن معاملہ ایک دوسرے پر ڈالنے لگے ہیں۔

انتخابات 2018 کے دوران آر ٹی ایس کی ناکامی کی تحقیقات کے لئے کمیٹی کے قیام کا معاملہ لٹک گیا ہے۔ 22 روز گزرنے کے باوجود بھی کابینہ ڈویژن اور الیکشن کمیشن کمیٹی تشکیل کے بارے میں لاعلم ہیں۔کابینہ سیکرٹری کا کہنا کہ وزارت قانون سے رائے لینے کے بعد معاملہ الیکشن کمیشن کو بھجوا دیا ہے جبکہ الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ کمیٹی تشکیل کے معاملے پر کابینہ ڈویژن کو ہدایات جاری کر چکے ہیں۔

الیکشن کمیشن نے تحقیقاتی کمیٹی کی تشکیل کیلئے معاملہ کابینہ ڈویژن کو بھجوایا تھا، کابینہ ڈویژن نے تجویز دی تھی کہ کمیٹی قیام کا معاملہ نئی حکومت پر چھوڑ دیا جائے۔

یہ بھی پڑھیے

نادرا آر ٹی ایس کی ناکامی کا ذمے دار قرار

آر ٹی ایس معاملے پر چیئرمین نادرا مکمل حقائق سے آگاہ کریں،وزیراعظم کی ہدایت

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top