تازہ ترین
اسحاق ڈار کے خلاف ایک اور ضمنی ریفرنس کی منظوری

اسحاق ڈار کے خلاف ایک اور ضمنی ریفرنس کی منظوری

اسلام آباد: (14 فروری 2018) احتساب عدالت نے سابق وزیر خزانہ کے خلاف دائر زائد اثاثہ جات ریفرنس میں ایک اور ضمنی ریفرنس دائر کرنے کی استدعا منظور کرتے ہوئے کیس کی سماعت 23 فروری تک ملتوی کردی ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد کی احتساب عدالت میں سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے خلاف زائد اثاثہ جات کیس کی سماعت وقفے کے بعد دوبارہ شروع ہوئی، جج محمد بشیر نے کیس کی سماعت کی۔

اس موقع پر نیب پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ  نیب نے اسحاق ڈار کے خلاف ایک ضمنی ریفرنس دائر کرنا ہے، لہذا عدالت اس کی اجازت دے، نیب پراسیکیوٹر نے بتایا کہ مذکورہ ریفرنس تفتیشی افسرنادر عباس نے تیار کیا ہے۔جس پر احتساب عدالت نے پراسیکیوٹر کی درخواست منظور کرتے ہوئے کہا کہ 23 فروری کو نیب ضمنی ریفرنس پر گواہان کے بیانات کے ساتھ ہی نادر عباس کا بیان بھی ریکارڈ کرا دیا جائے گا۔ بعد ازاں کیس کی سماعت تئیس فروری تک ملتوی کردی گئی ہے۔اس سے قبل صبح ہونے والی سماعت کے آغاز پر احتساب عدالت کے جج نے نیب پراسیکیوٹر سے گواہ پیش کرنے کا حکم دیا تو انہوں نے عدالت کو بتایا کہ گواہ راستے میں ہیں عدالت پہنچنے میں کچھ وقت لگے گا، جس پر جج محمد بشیر نے کیس کی سماعت ساڑھے گیارہ بجے تک ملتوی کرتے ہوئے تفتیشی افسر نادر عباس کو عدالت کے رو برو پیش کرنے کا حکم دیا تھا۔دریں اثناء اس سے قبل 08 فروری کو پاناما جے آئی ٹی کے سربراہ واجد ضیا نیب عدالت میں پیش ہوئے تھے ، تاہم ریکارڈ سپریم کورٹ کے پاس ہونے کے باعث وہ اپنابیان ریکارڈ نہ کراسکے تھے، جس پر عدالت نے انہیں آج طلب کیا تھا۔

احتساب عدالت میں پیش ہونے کے بعد واجد ضیا کو عدالت کے باہر صحافیوں نے گھیرے میں لیا اور ان سے آج کی سماعت سے متعلق سوالات کئے تاہم پاناما جے آئی ٹی سربراہ کسی بھی سوال کا جواب دئیے بغیر روانہ ہوگئے۔اس موقع پر سیکیورٹی عملے نے صحا فیوں کو دھکے بھی دئیے اور انہیں واجد ضیا کی گاڑی سے دور دھکیل دیا، اس سے قبل پاناما وزارت داخلہ نے احتساب عدالت میں حاضری کے پیش نظر واجد ضیا کی سیکیورٹی بڑھانے کی ہدایت کی تھی۔

یہ بھی پڑھیے

واجد ضیا نے اسحاق ڈار کے خلاف بیان ریکارڈ کرادیا

اسحاق ڈار کے کاغذات نامزدگی مسترد

 

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top