تازہ ترین
سوالات کا جواب نہ ملنے پر قومی اسمبلی کا اجلاس احتجاجا ملتوی

سوالات کا جواب نہ ملنے پر قومی اسمبلی کا اجلاس احتجاجا ملتوی

اسلام آباد: (13 ستمبر 2017)سردار ایاز صادق نے ایک بار پھر قومی اسمبلی کا اجلاس پندرہ منٹ کے لئے معطل کردیا ہے، ایاز صادق کا کہنا ہے کہ جواب نہ دینے والے نا اہل لوگوں کی وجہ سے تمام ارکان اسمبلی کو یرغمال نہیں بناسکتا۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کا اجلاس اسپیکر ایاز صادق کی زیر صدارت شروع ہوا، تو اپوزیشن کی جانب سے وزارت دفاع اور انسانی حقوق سے متعلق سوالات کئے گئے، تو متعلقہ وزارت کے وزیر ایوان میں موجود ہی نہ تھے۔حکومتی ارکان اور وفاقی وزرا کی ایوان میں عدم موجودگی پر ایاز صادق نے وزیر دفاع ، سیکریٹری دفاع اور انسانی حقوق کے سیکریٹری کو پندرہ منٹ کے اندر ایوان میں آنے کی ہدایت کی، تاہم مقررہ وقت گزرنے کے بعد بھی متعلقہ حکام ایوان میں نہ آئے، جس پر اسپیکر قومی اسمبلی نےشدید ناراضی کو اظہار کرتے کہا کہ میں جواب نہ دینے والے نا اہل لوگوں کی وجہ سے تمام ارکان اسمبلی کو یرغمال بناکر نہیں رکھ سکتا۔اس موقع پر پاکستان پیپلز پارٹی کے رکن قومی اسمبلی نوید قمرنے اسپیکر قومی اسمبلی کو تجویز دی کہ قومی اسمبلی کا اجلاس پندرہ منٹ کیلیے ملتوی کردیا جائے،جس پر اسپیکر قومی اسمبلی نے نوید قمر کی تجویز کو قبول کرتے ہوئے اجلاس پندرہ منٹ کیلیے ملتوی کر دیا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز بھی اسپیکر ایاز صادق نے قومی اسمبلی میں وزرا اور حکومتی اراکین کی مسلسل غیر حاضری پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے دھمکی دی تھی کہ اگر کوئی بھی وزیر ایوان میں نہ آیا تو حکومت کے خلاف ووٹنگ کی جائیگی۔اس موقع پر اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ کا کہنا تھا کہ ہم قومی اسمبلی اجلاس کیلئے آتے ہیں کیا ہمیں کام نہیں ، ہم بھی اپنے علاقوں میں دورے کرتے ہیں اور ایوان میں بھی آتے ہیں، ایوان میں اس وقت حکومت کے ڈیڑھ وزیر بیٹھے ہیں، کیا مذاق ہے ، اس طریقے سے اسمبلی نہیں چلنے دیں گے۔

یہ بھی پڑھئے

جے آئی ٹی رپورٹ:اپوزیشن رہنماؤں کا قومی اسمبلی کا اجلاس بلانے کیلئے اتفاق

کورم پورا نہ ہونے پر قومی اسمبلی کا اجلاس ملتوی

Comments are closed.

Scroll To Top