تازہ ترین
وزیراعظم، وزیر دفاع اور دیگر کے خلاف کارروائی کیوں نہیں ہوتی؟ مرتضیٰ وہاب

وزیراعظم، وزیر دفاع اور دیگر کے خلاف کارروائی کیوں نہیں ہوتی؟ مرتضیٰ وہاب

کراچی: (20 فروری 2019) اسپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کی گرفتاری کے بعد پیپلزپارٹی نے تنقیدی توپوں کا رخ نیب کی طرف کرلیا۔ مشیر اطلاعات سندھ مرتضیٰ وہاب نے کہا ہے کہ انکوائری کے مرحلے پر گرفتاری ضروری ہے تو وزیراعظم، وزیر دفاع اور دیگر کے خلاف کارروائی کیوں نہیں ہوتی۔

مشیر اطلاعات مرتضیٰ وہاب سمیت صوبائی وزراء کا سندھ اسمبلی میں ہنگامی اجلاس ہوا۔ اجلاس میں اسپیکر سندھ اسمبلی کی گرفتاری سے متعلق قانونی پہلوؤں کا جائزہ لیا گیا۔

سندھ اسمبلی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بیرسٹر مرتضیٰ وہاب نے کہا کہ وزیراعظم، اسپیکر قومی اسمبلی اور کئی وفاقی وزراء کے خلاف بھی انکوائریاں چل رہیں ہیں۔ کیا وزیراعظم سمیت دیگر وفاقی وزراء اور پی ٹی آئی رہنماؤں کے ساتھ بھی یہی رویہ اپنایا جائے گا؟

مرتضیٰ وہاب نےکہا کہ صرف اپوزیشن رہنماؤں کو حراست میں لیا جانا کہاں کا انصاف ہے؟

انہوں نے کہا کہ میڈیا کے ذریعے نیب کی کارروائی کا علم ہوا۔ سیاست کی تاریخ میں پہلی مرتبہ کسی ایکٹنگ اسپیکر کو گرفتار کیا گیا ۔ہم نے پہلے بھی کیسز کا سامنا کیا ہے اور اب بھی کر رہے ہیں۔

مرتضیٰ وہاب نے مزید کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی نیب کے اس اقدام پر اپنے آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کرے گی۔

Comments are closed.

Scroll To Top