تازہ ترین
نااہلی کے فیصلے پر جہانگیرترین نے نظرثانی کی درخواست دائرکردی

نااہلی کے فیصلے پر جہانگیرترین نے نظرثانی کی درخواست دائرکردی

اسلام آباد: (12 جنوری 2018) پاکستان تحریک انصاف کے رہنما جہانگیرخان ترین نےنااہلی کے فیصلے کیخلاف سپریم کورٹ میں نظرثانی کی درخواست دائرکرتے ہوئے موقف اختیار کیا ہے کہ انہوں نے کاغذات نامزدگی میں جان بوجھ کر اثاثے چھپانے کی کوشش نہیں کی۔

تفصیلات کے مطابق جہانگیر ترین نے سپریم کورٹ میں نااہلی کے خلاف نظر ثانی کی درخواست دائر کرتے ہوئے اپنی درخواست کےساتھ انہوں نے بیان حلفی بھی جمع کرایا ہے۔

جہانگیر ترین نے حلف نامے میں کہا ہے کہ میرے چار بچے ہیں، چاروں شادی شدہ اور خود مختار ہیں، میں نے کاغذات نامزدگی میں جان بوجھ کر اثاثے چھپانے کی کوشش نہیں کی۔ میں نے ٹرسٹ پاکستان کے بینکنگ چینلز سے واجبات کی منتقلی کے ذریعے قائم کیا، ٹرسٹ کے قیام کا مقصد بچوں کو برطانیہ میں گھر کی فراہمی تھا، خود کو اور اپنی بیوی کو تاحیات بینیفیشری بنانا محض حفاظتی اقدام تھا،عدالت اپنے فیصلے پر نظرثانی کرے۔واضح رہے پندرہ دسمبر دوہزار سترہ کو چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے حنیف عباسی کی درخواست پر اثاثے چھپانے پر جہانگیر ترین کو نااہل قرار دیا تھا۔

واضح رہے کہ فیصلے کے فوری بعد پی ٹی آئی نے جہانگیر ترین کو نا اہل قرار دینے کے عدالتی فیصلے کو چیلنج کرنے کا اعلان کیا تھا سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ جہانگیر ترین کے خلاف تین الزامات تھے، انہیں ایک الزام پر نااہل کیا گیا جو ایک تکنیکی مسئلہ ہے۔

یہ بھی پڑھیے

جہانگیر ترین تاحیات نا اہل قرار

حنیف عباسی کی درخواست مسترد، عمران خان نا اہلی بچ گئے

Comments are closed.

Scroll To Top