تازہ ترین
اب قوم کا پیسہ لندن اور دبئی نہیں جائے گا، اسد عمر

اب قوم کا پیسہ لندن اور دبئی نہیں جائے گا، اسد عمر

اسلام آباد : (03 اکتوبر،2018) وزیرخزانہ اسد عمر اپوزیشن پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ہم سے چالیس دن میں کام پوچھنے والے چالیس سال تک کیا کرتے رہے، اب قوم کا پیسہ قوم پرخرچ ہوگا،دبئی اور لندن نہیں جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی میں منی بجٹ پر اظہار خیال کرتے ہوئے وزیرخزانہ اسدعمر نے کہا کہ گزشتہ سال صرف اکسٹھ ارب روپے ترقیاتی منصوبوں پر خرچ کئے گئے، اس سال گزشتہ سال کی نسبت زیادہ رقم ترقیاتی منصوبوں پر خرچ ہوگی، سابقہ حکومتوں نے ٹرانسمیشن لائن بچھاتے وقت چھوٹے صوبوں پر توجہ نہیں دی۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

Posted by Abbtakk on Wednesday, October 3, 2018

وزیر خزانہ نے گذشتہ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ جو کام یہ چالیس سال میں نہ کر سکے ہم سے پوچھتے ہیں کہ چالیس دن میں کیوں نہ کیے، مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے بیواؤں کی پنشن روکی ہوئی تھی، پی آئی اے کا جہاز اڑ نہیں سکا کیوں کہ ادارے پر قرض اتنا بڑھ چکا تھا۔

اسد عمر نے کہا کہ دودھ اور شہد کے بہتی ہوئے نہروں کے سائے میں گذشتہ سال گردشی قرضے میں چار سو ارب سے زائد اضافہ ہوا، یہ گردشی خسارہ دودھ اور شہد کی نہروں کے سائے میں بڑھا،اور آج مجموعی طور ہر گردشی قرضہ 1200 ارب تک پہنچ چکا ہے۔وزیر خزانہ نے کہا کہ 454 ارب روپے کا خسارہ صرف گیس کے شعبے میں ہے، تمام آئی پی پیز کہہ رہی ہیں کہ ہم میں بجلی کی پیداوار نہیں دے سکتے، آج ریاست مدینہ کا ذکر کرنے والے کاش اپنی حکومت سے بھی سوال کرلیتے۔

اسد عمر نے کہا کہ ٹرانسمیشن لائنز بچھاتے ہوئے کم ترقی یافتہ اور دور دراز علاقے نظر انداز کئے گئے، افسوس کی بات ہے کہ خیبرپختونخوا اور بلوچستان کو لوڈشیڈنگ نے مار دیا اور کہا جاتا ہے کہ وہاں کے لوگ بجلی کا بل نہیں دیتے اس لیے لوڈشیڈنگ ہے،انہوں نے کہا حقیقت یہ ہے کہ آج بجلی ہو بھی تو خیبرپختونخوا اور بلوچستان تک نہیں پہنچائی جاسکتی۔

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیر خزانہ نے کہا کہ نان فائلر کو بتا دوں ریاست اتنی کمزور نہیں جتنی نظر آتی ہے اور ریاست میں دم ہے کہ آپ سے پیسہ نکلوا سکے، ہم نے بینکوں میں بڑی رقم رکھنے والے نان فائلرز کو پکڑنے کا عمل شروع کردیا ہے۔

اسد عمر کا مزید کہنا تھا کہ اسٹیل مل گزشتہ تین سال سے بند ہے، کہتےہیں معیشت درست ہے، پاکستان اسٹیل کی تنخواہیں اورپنشن روکنے پر دو اموات ہوئیں۔انھوں نے کہا وزیراعظم کیلئے گاڑیاں خریدنے کیلئے پیسے ہیں لیکن ان ورکرز کیلئے نہیں، ہم پرتنقید کرنے سے پہلے پہلے ان معاملات کو بھی دیکھ لیتے،ان کا کہنا تھا کہ ودہولڈنگ ٹیکس کی معلومات ایجنٹس کی ذمہ داری ہے ہمیں پہنچائیں، بینکوں میں بڑی بڑی رقوم رکھنے والوں کی معلومات لیں گے، ڈیم فنڈ کے لئے دیا گیا استثنیٰ واپس نہیں لیا جائے گا، کسانوں کیلئے 6 سے 7ارب کی سبسڈی پہلے ہی منظور کرچکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

معیشت چندے اور ملک جادو سے نہیں چلتا، بلاول بھٹو

خالی ٹینک اور توپ ہماری حفاظت نہیں کر سکتے، احسن اقبال

 

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top