تازہ ترین
ایف آئی اے منی لانڈرنگ کیس میں اپنا جواب آج جمع کرائی گی

ایف آئی اے منی لانڈرنگ کیس میں اپنا جواب آج جمع کرائی گی

اسلام آباد: (13 اگست،2018) ایف آئی اے نے منی لانڈرنگ سے متعلق اپنی رپورٹ تیار کرلی ہے، جسے آج سپریم کورٹ میں پیش کیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق سپریم کورٹ کی ہدایت پر تیار کئی گئی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ دس سے زائد سیاسی جماعتیں مجموعی طور پر 35 ملین ڈالرز کی غیر قانونی ٹرانزیکشن میں ملوث ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ ایف آئے اے نے غیر قانونی ٹرانزیشکن کرنے والے کئی جھوٹے اکاؤئنٹس کا پتہ چلالیا ہے۔

دوسری جانب فریال تالپور کے خلاف منی لانڈرنگ کیس میں عدالت نے ایف آئی اے ، ڈپٹی اٹارنی جنرل اور ایڈووکیٹ جنرل سمیت دیگر کو نوٹس جاری کردیا ہے۔ سندھ ہائی کورٹ میں فریال تالپور کے خلاف ایف آئی اے کے عبوری چالان کے خلاف دائر درخواست پر سماعت ہوئی،عدالت میں وکیل صفائی فاروق ایچ نائیک کا کہنا تھا کہ ایف آئی اے کی ایف آئی آر میں منی لانڈرنگ کا ذکر نہیں فریال تالپور کا ایف آئی آر میں کوئی کردار واضح نہیں الزامات سےان کا کوئی تعلق نہیں ایف آئی آر سے کہیں ظاہر نہیں کہ کمیشن یا بدعنوانی کی ہو ۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

جس پر عدالت نے ایف آئی اے سے استفسار کیا کہ کیا فائنل چالان جمع کرادیا ہے ،جس پر ایف آئی اے کے وکیل صفائی کا کہنا تھا کہ نہیں فائنل چالان ابھی جمع نہیں کرایا گیا  عدالت کا کہنا تھا کہ پھر وکیل صاحب آپ کیسے کہہ رہے کہ کہ نام چالان سے نکال دے ابھی فائنل چالان تو جمع ہونے دیں ۔

عدالت نے کہا کہ چالان میں تو درخواست گزار روپوش قرار دئیے گئے ہیں اور ان کے نام پر لال مارک ہے ، جس پر وکیل صفائی کا کہنا تھا کہ ایف آئی اے نے فریال تالپور کو مفرور قرار دے رکھا ہے۔

عدالت سے استدعا ہے کہ ایف آئی اے کے چالان کو غیر قانونی قرار دیا جائے عدالت نے وکیل صفائی کا موقف سنتے ہوئےایف آئی اے ڈپٹی اٹارنی جنرل ایڈووکیٹ جنرل سمیت دیگرکو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت ملتوی کردی ہے۔

فریال تالپور نے ایف آئی اے کا عبوری چالان چیلنج کردیا

گذشتہ روز آصف زرداری کی ہمشیرہ فریال تالپور نے منی لانڈرنگ کیس میں وفاقی تحقیقاتی ادارے کے عبوری چالان کو عدالت میں چیلنج کردیا ہے،فریال تالپور نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ ایف آئی آر میں کسی قسم کی منی لانڈرنگ کا ذکر نہیں ہے، چالان میں میرا کوئی کردار واضح نہیں اور الزامات سے میراکا کوئی تعلق نہیں۔

ویڈیودیکھنے کےلیے پلے کابٹن دبائیں

درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ ایف آئی اے کی جانب سے دائر مقدمہ خارج کیا جائے، ایف آئی اے کے چالان کو غیر قانونی قرار دے کر معطل کیا جائے اور عدالت چالان پر حکم امتناع جاری کرکے کارروائی کرے۔

یاد رہے کہ اٹھائیس جولائی کو منی لانڈرنگ کیس میں سابق صدر آصف علی زرداری اور فریال تالپور آج بھی ایف آئی اے ٹیم کے سامنے پیش نہ ہوئے، جبکہ فریال تالپور نے جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونے کے لیئے مزید پندرہ دن کی مہلت مانگی تھی۔

فریال تالپور کے وکیل فاروق ایچ نائیک نے منی لانڈرنگ کیس کے سلسلے میں ایف آئی اے کی جے آئی ٹی کے سامنے پیش ہونے کیلئے مزید پندرہ دن کی مہلت کی درخواست جمع کرائی،درخواست میں کہا گیا ہے کہ فریال تالپور آج مصروف ہیں، جےآئی ٹی کے سامنے پیش ہونے کے لیے کوئی اور تاریخ دی جائے۔

یاد رہے کہ انتخابات سے قبل منی لانڈرنگ کیس میں ایف آئی اے حکام کی جانب سے آصف زرداری اور فریال تالپور طلبی کے باوجود پیش نہ ہوئے تھے، دونوں کی جانب سے فاروق ایچ نائیک ایسوسی ایٹ کے وکلاء نے ایف آئی اے حکام کے سامنے پیش ہوکر درخواست دی تھی۔ درخواست میں کہا گیا تھا کہ آصف علی زرداری انتخابی سرگرمیوں کی وجہ سے مصروف ہیں، 25 جولائی کے بعد تمام سوالوں کے جواب دیں گے، 2014 کا کیس ہے اور مؤکل کو جولائی 2018 میں طلب کیا گیا، طلبی اس وقت کی جارہی جب انتخابات کا 2 ہفتوں بعد انعقاد ہورہا ہے۔

فریال تالپور کی جانب سے بھی جواب میں کہا گیا تھا کہ پیپلزپارٹی خواتین ونگ کی سربراہ ہیں اور پی ایس 10 لاڑکانہ سےانتخابات میں حصہ لے رہی ہیں، الیکشن مہم کی وجہ سے تمام ریکارڈ جمع کرکے جواب دینا ممکن نہیں، لہذا جواب داخل کرانے کےلیے 31 جولائی تک مہلت دی جائے، وقت دیں انکوائری میں مکمل تعاون کیا جائے۔یاد رہے کہ انتخابات 2018 میں حصہ لینے کی وجہ سے سپریم کورٹ نے آصف علی زرداری اور فریال تالپور کو الیکشن تک مہلت دی تھی۔

یہ بھی پڑھیے

منی لانڈرنگ کیس میں فریال تالپور کی قبل از گرفتاری ضمانت منظور

منی لانڈرنگ کیس: فریال تالپور کی ضمانت قبل از گرفتاری منظور

 

 

Comments are closed.

Scroll To Top