تازہ ترین
بادی النظرمیں نہال ہاشمی نےتوہین عدالت کی ہے،سپریم کورٹ

بادی النظرمیں نہال ہاشمی نےتوہین عدالت کی ہے،سپریم کورٹ

اسلام آباد: (24 جولائی 2017)سپریم کورٹ نے نہال ہاشمی کی متنازعہ تقریر کا نامکمل متن پیش کرنے پر اٹارنی جنرل پر برہمی کا اظہار کیا ہے، جسٹس عظمت کا کہنا تھا کہ اٹارنی جنرل صاحب آپ نے تو ٹرانسکرپٹ جمع کرانے میں بھی جعل سازی کردی ، کیس کی مزید سماعت 21 اگست تک ملتوی کردی گئی۔

ویڈیو دیکھنے کےلیے پلے کا بٹن دبائیں

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں پاناما کیس عملدر آمد کرنے والے تین رکنی خصوصی بینچ نے سینیٹر نہال ہاشمی کی جانب سے کی گئی متنازعہ تقریر کیس کی سماعت کی، اس موقع پر نہال ہاشمی کے وکیل حشمت حبیب اور اٹارنی جنرل عدالت میں پیش ہوئے۔

خصوصی بینچ نے اٹارنی جنرل اشتر اوصاف سے سینیٹر نہال ہاشمی کے متنازعہ بیان کی سی ڈی اور مکمل متن طلب کی، اٹارنی جنرل کی جانب سے سی ڈی پیش کی گئی ، جس پر جسٹس عظمت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں کیا معلوم اس میں کیا ہے، آپ متنازعہ تقریر کا متن بھی پیش کریں، جس پر اٹارنی جنرل نے جواب دیا کہ نہال ہاشمی کی جانب سے تقریر کا متن فراہم نہیں کیا گیا، اگر وہ مجھے دیں گے تو عدالت کو پیش کروں گا۔ جسٹس عظمت سعید نے کہا کہ ایک منصوبے کے تحت وہ سی ڈی اور ٹرانسکرپٹ جمع کروائے گئے جو متعلقہ نہیں، عدالت کو چکر دینے سے باز آ جائیں۔

ویڈیو دیکھنے کےلیے پلے کا بٹن دبائیں

اس موقع پر نہال ہاشمی کے وکیل حشمت حبیب نے اپنے دلائل میں کہا کہ یہ سب کچھ عمران خان کی وجہ سے ہوا ہے، جس پر جسٹس اعجازالاحسن نے استفسار کیا کہ عمران خان کا اس کیس سے کیاتعلق ہے، جواب میں حشمت حبیب نے کہا کہ سارا ڈرامہ تو عمران خان کا رچایا ہوا ہے، پی ٹی آئی چیئرمین نے بھی ایسی تقاریر کیں لیکن آج تک عدالت نے ان کے خلاف توہین عدالت کی کاروائی کیوں نہیں کی،جس پرجسٹس عظمت سعید نے کہا کہ اس وقت عمران خان کیس ہمارے سامنے زیرسماعت نہیں، ہم نہال ھاشمی کو دفاع کا بھرپور موقعہ دینگے اورقانون کے تمام تقاضے پورے کرتے ہوئے شہادتوں پر فیصلہ دیا جائے گا۔

دوران سماعت نہال ہاشمی کے وکیل نے مؤقف اپنایا کہ تحریری جواب دینے کا موقع دیں معاملہ واضح ہو جائے گا، عدالت کو بتانا چاہتے ہیں کہ نہال ہاشمی نےکن حالات میں تقریر کی،27 صفحات پر مشتمل جواب پہلے ہی آچکا ہے۔
جسٹس اعجاز الاحسن نے استفسار کیا کہ کیا آپ نے تقریر میں جو کچھ کہا وہ سوچے سمجھے بغیر کہا؟ نہال ہاشمی کے وکیل نے کہا عدالت کو بتایا تھا کہ غلطی کی نشاندہی پر معافی مانگ لیں گے، اللہ تعالی مدد کرنے والا ہے، جسٹس عظمت سعید نے جواب دیا کہ اللہ تعالیٰ سب کا ہے اور ہمارا بھی ہے۔

ویڈیو دیکھنے کےلیے پلے کا بٹن دبائیں

نہال ہاشمی کے وکیل نے کہا کہ اپنے دفاع کے لیے لوگوں کو کراچی سے لانا ہے، اتنی مہنگائی ہے ان کو لانا بھی ہے خرچہ بھی اٹھانا ہے۔ اس پر جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دیئے کہ پہلے توہین عدالت کرتے ہیں پھر مہنگائی کا رونا روتے ہیں، بادی النظر میں نہال ہاشمی نے توہین عدالت کی ہے۔

سپریم کورٹ نے نہال ہاشمی کو تحریری جواب جمع کروانے کی ہدایت کی ہے اور حکم دیا کہ نہال ہاشمی آئندہ سماعت پرآپ اپنے گواہ بھی پیش کریں۔ عدالت نے کیس کی سماعت 21 اگست تک ملتوی کردی۔

یہ بھی پڑھیے

اشتعال انگیز تقریر:سپریم کورٹ نے نہال ہاشمی پر فرد جرم عائد کردی

نہال ہاشمی نے توہین عدالت کیس کی سماعت روکنے کی استدعا کردی

Comments are closed.

Scroll To Top