تازہ ترین
چیف جسٹس ثاقب نثار کا لیگل ریفارمز کے آغاز کا اعلان

چیف جسٹس ثاقب نثار کا لیگل ریفارمز کے آغاز کا اعلان

کوئٹہ: (10 اپریل 2018) چیف جسٹس پاکستان لیگل ریفارمز کے آغاز کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ججزکے پاس بہت کام ہے اس وجہ سے مقدمات تیزی سے نمٹا نہیں پاتے ساتھ ہی انہوں نے وکلا پر زور دیا ہے کہ وہ ہڑتال کا کلچر ختم کریں۔

کوئٹہ میں ضلع کچہری بار روم میں وکلا سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس پاکستان نے کہا کہ ہمارے قوانین بہت بوسیدہ ہوچکے ہیں، میں نے بہت ساری ریفارمز پر کام شروع کیا ہوا ہے, اللہ کرے کامیاب ہو جاؤں، مجھے رضا کار چاہئیں جو اس مشن میں ساتھ دیں۔

یہ ویڈیو دیکھنے کیلئے پلے کا بٹن دبائیے

جسٹس ثاقب نثار نے کہا کہ ججزکے پاس بہت کام ہے اس وجہ سے مقدمات تیزی سےنمٹا نہیں پاتے، وکلا پر ذمے داری ہے تعاون کریں اور ہڑتال کا کلچر ختم کریں۔

ضلع کچہری بار روم میں وکلا سے خطاب میں چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ وکیل لاچار نہیں، آپ بہت مضبوط اورحوصلہ مند لوگ ہیں، وکیل جب خود کو لاچار اور بے بس کہتے ہیں مجھے شرم آتی ہے۔

اس موقع پر چیف جسٹس آف پاکستان نے کہا ہزارہ برادری کے ٹارگٹ کلنگ کے واقعات نے میرا سر شرم سے جھک گیا، جب 8اگست کا سانحہ ہوا نو اگست کو میں کوئٹہ پہنچا، بلوچستان کی بہادر عوام میں نے کہیں نہیں دیکھی۔جسٹس ثاقب نثار کا کہنا تھا کہ ہمیں مل جل کر کوششیں کرنی ہے جو لوگ اپنی حالت بدلنے کی کوشش نہیں کرتے انکی حالت نہیں بدل سکتی۔

گزشتہ روز کوئٹہ میں ایک تقریب سے خطاب میں چیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار کا کہنا تھا کہ مجھے سو موٹو کا شوق نہیں تمام از خود نوٹسز نیک نیتی سے لیئے ہیں ۔ بنیادی حقوق سے متعلق از خود نوٹس کا مطلب ان پر عملدرآمد کرانا ہے۔ عوام کو بنیادی حقوق ملنے چاہیئے۔چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثار نےکہاہےکہ وہ وضاحت دینے کے پابند نہیں ہیں۔انہیں سوموٹو کا شوق نہیں ہے۔تمام ازخود نوٹسز نیک نیتی سے لئے۔بنیادی حقوق سے متعلق ازخود نوٹس کا مطلب ان پرعملدرآمد کرانا ہے۔

کوئٹہ میں بلوچستان بارایسوسی ایشن کی جانب سے چیف جسٹس آف پاکستان کےاعزازمیں عشائیہ دیا گیا۔ تقریب سےخطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس نےکہا کہ عوام کو بنیادی حقوق ملنے چاہیئں۔ بلوچستان میں تعلیم پر توجہ نہیں دی گئی۔

یہ بھی پڑھیے

سانحہ ماڈل ٹاؤن:چیف جسٹس کا متاثرین کو انصاف میں تاخیر کا نوٹس

چیف جسٹس کا قائداعظم سولر پاور پلانٹ اور پاور کمپنیوں پر ازخود نوٹس

 

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top