تازہ ترین
ملک بھر میں حضرت امام حسینؓ کا چہلم مذہبی عقیدت و احترام سے منایا جارہا ہے

ملک بھر میں حضرت امام حسینؓ کا چہلم مذہبی عقیدت و احترام سے منایا جارہا ہے

اسلام آباد: (10 نومبر 2017) ملک بھر میں حضرت امام حسینؓ کا چہلم مذہبی عقیدت و احترام سے منایا جارہا ہے۔

ویڈیودیکھنے کےلیےپلےکابٹن دبائیں

راول پنڈی

راولپنڈی میں چہلم امام حسینؓ کا مرکزی جلوس امام بارگاہ عاشق حسین کمیٹی چوک سے صبح 10 بجے برآمد ہوگا۔ قائد ملت جعفریہ آغا حامد علی موسوی مرکزی جلوس کی قیادت کریں گے۔ جلوس ٹرنک بازار، بنک چوک سے ہوتا ہوا فوارہ چوک پہنچے گا جہاں مجلس بپا کی جائے گی۔ یہ جلوس ڈنگی کھوئی چوک، بانساں والا چوک سے جامع مسجد روڑ پر ہوتا ہوا رات گئے قدیمی امام بارگاہ بنی جاکر اختتام پذیر ہو گا۔جلوس کی سیکیورٹی کیلئے سخت انتظامات کئے گئے ہیں۔ جلوس کے گرد تین سیکیورٹی حصار بنائے جائیں گے۔ پہلا حصار ابراہیم اسکاؤٹس اور ایم ایف رضا کار، دوسرا پولیس، جبکہ تیسرا رینجرز کا ہوگا۔ سیکیورٹی کے فرائض 3 ہزار اہلکار انجام دیں گے۔

ٹریفک پلان کے مطابق سٹی ٹریفک پولیس کے 6 ڈی ایس پیز، 10 انسپکٹر انچارج، 231 وارڈنز اور 23 جونیئر ٹریفک وارڈنز خدمات انجام دیں گے۔کمیٹی چوک سے اقبال روڈ اور کالج روڈ کی طرف ہر قسم کی ٹریفک کا داخلہ ممنوع ہو گا۔ جلوس کے نیا محلہ چوک پہنچنے پر کالج چوک سے فوارہ چوک کی طرف تمام ٹریفک بند ہوگی۔ ناولٹی سینما چوک سے کشمیری بازار کی طرف بھی ٹریفک بند ہوگی۔

لاہور

چہلم حضرت امام حسینؓ کی سیکیورٹی کے حوالے سے لاہور میں 15 ہزار سے زائد پولیس اہلکاروں کی تعیناتی کے علاوہ زائرین کو چار سطحی سکییورٹی حصار سے گزارا جائے گا۔  لاہور میں چہلم حضرت امام حسینؓ کے مرکزی جلوس پر 9 ایس پیز، 24 ڈی ایس پیز اور 74 ایس ایچ اوز سمیت 15 ہزار پولیس اہلکار فرائض سر انجام دیں گے۔ مرکزی جلوس کی  فضائی نگرانی کی جائے گی۔ زائرین کو چار سطحی سیکیورٹی حصار سے گزارا جائے گا۔ سکیورٹی انتظامات کو یقینی بنانے کیلئے واک تھرو گیٹس، میٹل ڈیٹکٹرز اور بیر ئیرز کا بھی استعمال ہوگا۔ جلوس کے ارد گرد پی آر یو، ایلیٹ فورس اور ڈولفن اسکواڈ کے اہلکارگشت کریں گے۔لاہور میں سیف سٹی اتھارٹی سینٹر میں روٹس پر لگائے گئے 230 کیمروں سے جلوس کی مانیٹرنگ کی جائے گی۔ غیر متعلقہ اشخاص کو مرکزی جلوس میں داخل ہونے کی اجازت نہیں ہوگی۔ ایس پی ہیڈکوارٹرز عاطف نذیر چہلم کے مو قع پر پولیس اہلکاروں کے ویلفیئر انچارج ہوں گے ۔

اس کے علاوہ جلوس کے ملحقہ راستوں کو جلوس کے گزرنے پر چند منٹ کیلئے بند کرنے کے بعد کھول دیاجائے گا۔

کراچی

چہلم حضرت امام حسینؓ کے موقع پر کراچی میں بھی مجالس عزا منعقد ہوں گی۔ مرکزی مجلس نشترپارک میں صبح 11 بجے منعقد ہوگی، جس سے علامہ عباس کمیلی خطاب کریں گے۔ مرکزی جلوس دوپہر ایک بجے نشتر پارک سے بر آمد ہوگا۔ جلوس کی سیکیورٹی کیلئے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔ جلو س دوپہر ایک بجے نشتر پارک سے بوتراب اسکاؤٹس کی زیر قیادت بر آمد ہوگا ۔ جلوس کے شرکاء نماز ظہرین ایم اے جناح روڈ پر ادا کریں گے۔شہرقائد میں جلوس کی گزرگاہوں کو بم ڈسپوزل اسکواڈ سے چیکنگ کرائی جائے گی، جبکہ اہم و بلند عمارتوں کے اوپر شارپ شوٹرز بھی تعینات رہیں گے۔ پولیس و رینجرز کی بھاری نفری جلوس کے ہمراہ موجود رہے گی جبکہ سراغ رساں کتوں کی مدد سے بھی جلوس کی گزرگاہوں کو چیک کیا جائے گا۔ جلوس کے راستے میں آنے والی سڑکوں کو کنٹینرز لگاکر سیل کردیا جائے گا۔

چہلم کی مناسبت سے انتظامیہ نے ٹریفک کے بھی متبادل انتظامات کیے ہیں اور پبلک ٹرانسپورٹ کو جلوس کے راستوں میں جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ مرکزی جلوس اپنے مقررہ راستوں سے ہوتا ہوا حسینیاں ایرانیاں کھارادر پر اختتام پزیر ہوگا۔

ملتان

حضرت امام حسینؓ کے چہلم کے موقع پر ضلع ملتان میں میں 32 مجالس اور 9 جلوس نکالے جائیں گے جس میں سے 8 مجالس اور ایک جلوس کو حساس قرار دیا گیا ہے۔ مرکزی جلوس امام بارگاہ جوادیہ سے برآمد ہوکر آستانہ لعل شاہ پر اختتام پزیر ہوگا۔جلوسوں اور مجالس کی سیکیورٹی کیلئے سخت انتطام کیے گئے ہیں۔ جلوسوں اور مجالس کی سیکیورٹی کیلئے ایک ہزار 795 مرد و خواتین پولیس اہلکار اور افسران اپنے فرائض سرانجام دیں گے۔ ترجمان پولیس کے مطابق 13 گزیٹڈ پولیس افسران بھی جلوسوں کی نگرانی کریں گے۔

ملتان پولیس کے علاوہ پاکستان آرمی اور رینجرز کے اہلکار بھی امن عامہ کے قیام میں اپنا کردار ادا کریں گے۔ چہلم حضرت امام حسینؓ کے موقع پر ڈسٹرکٹ پولیس کی 6 کمپنیاں بھی پولیس لائن میں ریزرو رہیں گی۔ پولیس حکام کے مطابق جلوسوں کے راستوں کو مکمل طور پر بند رکھا جائے گا اور ٹریفک کا متبادل روٹ بھی جاری کیا گیا ہے۔

فیصل آباد

چہلم امام حسین کے موقع پر سکیورٹی انتظامات کو فول پروف بنانے کے لیے ضلعی پولیس نے سکیورٹی پلان تشکیل دے دیا مرکزی جلوس کی نگرانی کے لیے ڈرون کیمرے بھی استعمال کیے جائیں گے۔چہلم امام حسین کے موقع پر فیصل آباد میں 17 مجالس منعقد کی جائیں گی، جبکہ 12 جلوس بھی نکالے جائیں گے جن کی سیکیورٹی کیلئے 5 ایس پیز اور 13 ڈی ایس پیز کی زیر نگرانی 2 ہزار سے زائد اہلکار ڈیوٹی کے فرائض سر انجام دیں گے۔ جلوس کی ڈرون کیمروں کی مدد سے فضائی نگرانی بھی کی جائے گی، جبکہ رینجرز اور پاک آرمی کی ایک ایک کمپنی بھی فرائض نبھائے گی۔

پشاور

پشاور میں بھی چہلم حضرت امام حسینؓ کی سیکیورٹی کے کڑے انتظامات کیے گئے ہیں۔ڈپٹی کمشنر کی جانب سے دفعہ 144 کے علاوہ اندرون شہر حساس علاقوں میں ناکہ بندی اور چیکینگ کا سلسلہ بھی شروع کر دیا گیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

پشاور: چہلم حضرت امام حسینؓ کی سیکیورٹی کیلئے انتظامات مکمل

کراچی: چہلم امام حسین، سیکیورٹی کے انتہائی سخت انتظامات

 

Comments are closed.

Scroll To Top