تازہ ترین
قرضوں کی مد میں لیئے گئے 95 ارب ڈالر کا پوچھ کر کیا گستاخی کی، چیئرمین نیب

قرضوں کی مد میں لیئے گئے 95 ارب ڈالر کا پوچھ کر کیا گستاخی کی، چیئرمین نیب

اسلام آباد: (9 دسمبر 2018) چیئرمین نیب جسٹس ریٹائر جاوید اقبال نے کہا ہے کہ قرضوں کی مد میں لئے گئے95ارب ڈالرملکی ترقی میں نظر نہیں آتے۔ نیب نے اگر یہ پوچھ لیا کہ 95ارب ڈالرکیسے خرچ ہوئے تو کیا یہ گستاخی ہے۔ کرپشن کرنے والے ہرشخص کو حساب دینا ہوگا۔ حکومت کے مخالف ہیں نہ حمایتی نیب کی وفاداری صرف ریاست کے ساتھ ہے۔ کسی کے خلاف انتقامی کارروائی نہیں کی جاتی۔

انسداد بدعنوانی کے دن کے موقع پر ایوان صدر میں منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے قومی احتساب بیورو کے چیئرمین جسٹس ریٹائرڈ جاوید اقبال نے کہا کہ نیب محدود وسائل کے باوجود کرپشن کے خاتمے کے لئے کوشاں ہے۔ نیب غیر جانبداری کے ساتھ کام کر رہا ہے شاہ سے زیادہ شاہ کے وفادار نہیں ہے حکومت کے مخالف ہیں نہ حمایتی، نیب کی وفاداری صرف ریاست کے ساتھ ہے۔ بیوروکریٹس شاہ سے زیادہ شاہ کے وفادار نہ بنیں کسی کا چہرہ نہیں دیکھتے صرف کیس کو دیکھا جاتا ہے۔جسٹس جاوید اقبال نے کہا نیب کسی بھی دور میں پسندیدہ ادارہ نہیں رہا۔ ایک ادارہ سیاست میں شامل نہیں ہونا چاہتا لیکن اسے پارلیمنٹ کے فلور پرہدف تنقید بنایاجاتا ہے۔عوام کو معلوم ہے کہ کون اندھیرا پھیلا رہا ہے۔ وزیراعظم، وزیراعلیٰ یا چیف سیکریٹری، سب کو قانون کا سامنا کرنا پڑے گا۔چیئرمین نیب نے کہاکہ قرضوں کی مد میں لئے گئے 95 ارب ڈالر ملکی ترقی میں نظر نہیں آتے۔ نیب نے اگر یہ پوچھ لیا کہ 95 ارب ڈالر کیسے خرچ ہوئے تو کیا گستاخی ہوگئی؟ کسی کی عزت نفس کو ٹھیس نہ پہنچے یہ سامنے رکھ کر پوچھا گیا۔ جن کے پاس ستر سی سی بائیک تھیں، اب ان کےدبئی میں ٹاور ہیں اور اس سے متعلق تو پوچھا جائے گا۔ سابق اورموجودہ حکمرانوں کو پیغام دےدیا کہ جو کرے گا وہ بھرے گا۔چیئرمین نیب نے کہا کہ آج قانون کی حکمرانی ہے اور موجودہ حکومت نے نیب کو خود مختار ادارہ تسلیم کیا ہے۔ بڑے کنٹریکرز کی جانب سے نیب کی وجہ سے کام ٹھپ ہونے کا واویلا کیاجاتا ہے۔ نیب معیشت کے خلاف اقدام کیوں اٹھائے گا یہ بھی کہا گیا کہ حکومت اس بات پر ناراض ہوئی۔ حکومت کو اپنا دل بڑا رکھنا چاہیے۔

چیئرمین نیب نے کہا کہ حکومت کی کسی کرپشن کو نظر انداز کرنے کا کوئی جواز نہیں۔ نیب کا ہر قدم پاکستان اور پاکستانی عوام کی بہتری کیلئے ہے۔ اگر نیب نے کرپشن پر سزائے موت مقرر کردی تو ملک کی آبادی میں خاصی حد تک کمی ہوجائے گی۔

یہ بھی پڑھیے

آشیانہ اسکینڈل: نیب نے شہباز شریف کو احتساب عدالت میں پیش کردیا

نیب نے عثمان ڈار سے خواجہ آصف کی غیرملکی سرمایہ کاری کے ثبوت مانگ لیے

Comments are closed.

Scroll To Top