تازہ ترین
این اے 131 میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا حکم معطل

این اے 131 میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا حکم معطل

اسلام آباد: (08 اگست،2018) سپریم کورٹ نے پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے حلقہ این اے 131 لاہور میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا حکم معطل کردیا ہے، این اے 131 سے عمران خان نے سعد رفیق کو عام انتخابات میں شکست دی تھی۔

تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ نے سعد رفیق کی درخواست منظور کرتے ہوئے دو بارہ گنتی کاحکم دیا تھا جس کے خلاف پی ٹی آئی کی جانب سے سپریم کورٹ سے رجوع کیا گیا تھا، درخواست میں دوبارہ گنتی کا فیصلہ کالعدم قرار دینے کی استدعا کی گی تھی، جسے آج سپریم کورٹ نے منظور کرلیا ہے۔

ویڈیو دیکھنے کےلیے پلے کابٹن دبائیں

دوران سماعت سعد رفیق کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ اپنی پہلی تقریر میں عمران خان نے حلقے کھولنے کا کہا تھا، جس پر چیف جسٹس نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ یہ سیاسی بیانات ہوتے ہیں، ہم نے کل بھی ہائی کورٹ کا ایسا حکم نامہ معطل کیا تھا۔جسٹس اعجازالاحسن نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ الیکشن کمیشن کا معاملہ ہے، ہائی کورٹ کیسے مداخلت کرسکتی ہے، جس پر وکیل خواجہ سعدرفیق کا کہنا تھا کہ آر او کے پاس دوبارہ گنتی کا اختیار ہے، ساتھ ہی انہوں نے عدالت کو بتایا کہ جب جیت کا مارجن پانچ فیصد سے کم ہوتو دوبارہ گنتی ہوسکتی ہے۔

 گذشتہ روز عمران خان نے حلقہ این اے 131 میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا اسلام آباد ہائیکورٹ کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کیا تھا،  سپریم کورٹ میں دائر اپیل میں چئیرمین تحریک انصاف عمران خان نے موقف اپنایا تھا کہ حلقہ این ا ے 131 میں عمران خان نے 84 ہزار 313 ووٹ حاصل کیے جبکہ مخالف امیدوار مسلم لیگ (ن) کے رہنما خواجہ سعد رفیق نے 83 ہزار 633 ووٹ حاصل کیے۔  مسترد ووٹوں کی دوبارہ گنتی میں عمران خان پھر کامیاب قرار پائےاپیل کے مطابق خواجہ سعد رفیق نے حلقہ کے تمام ووٹوں کی دوبارہ گنتی کی درخواست ریٹر نگ افسر کو دی جس پر ہائیکورٹ نے عمران خان کی ریٹرننگ افسر کے فیصلے کے خلاف درخواست مسترد کردی۔

 

واضح رہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے حلقہ این اے 131 میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کیلئے سعد رفیق کی درخواست پر فیصلے میں دوبارہ گنتی کا حکم دیتے ہوئے عمران خان کی کامیابی کا نوٹیفکیشن جاری کرنے سے الیکشن کمیشن کو روک دیا تھا

اس سے قبل خواجہ سعد رفیق نے این اے 131 میں عمران خان کی کامیابی کو چیلنج کرتے ہوئے مسترد شدہ ووٹوں کی دوبارہ گنتی کی درخواست ریٹرننگ آفیسر کو دی تھی، ریٹرننگ آفیسر نے خواجہ سعد رفیق کی درخواست پر مسترد ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے بعد چیئرمین تحریک انصاف کی کامیابی کو برقرار رکھا۔

عمران خان کو خواجہ سعد رفیق پر 680 ووٹوں کی برتری حاصل تھی لیکن مسترد ووٹوں کی دوبارہ گنتی کے بعد یہ برتری کم ہو کر 608 رہ گئی۔ جس پر خواجہ سعد رفیق نے مکمل ووٹوں کی دوبارہ گنتی کی درخواست کی جسے آر او نے مسترد کر دیا تھا۔

یہ بھی پڑھیے

شوکت یوسف زئی کی کامیابی کا نوٹی فیکیشن روکنے کا حکم

الیکشن کمیشن نے عمران خان کے دو حلقوں سے کامیابی کے نوٹیفکیشن روک دیئے

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top