تازہ ترین
ایمنسٹی انٹرنیشنل کا کشمیریوں کے قتل عام کی آزادانہ اور شفاف تحقیقات کا مطالبہ

ایمنسٹی انٹرنیشنل کا کشمیریوں کے قتل عام کی آزادانہ اور شفاف تحقیقات کا مطالبہ

نئی دہلی: (18 دسمبر 2018) انسانی حقوق کی بین الاقوامی تنظیم ایمنسٹی انٹرنیشنل نے ہفتہ کے روز مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ میں بھارتی فورسز کے ہاتھوں شہریوں کے قتل عام کی آزادانہ اور شفاف تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق ایمنسٹی انٹرنیشنل کی بھارت میں متعین پروگرام ڈائریکٹر امیتا باسو نے نئی دلی میں جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ قابض انتظامیہ کو اس سانحہ کی آزادانہ طور پر مکمل تحقیقات کرانی چاہیئے اور اس میں ملوث اہلکاروں کے خلاف سول عدالتوں میں مقدمات چلائے جانے چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ مہلک آتشی ہتھیاروں کا استعمال صرف اسی صورت میں کیا جانا چاہیئے جب انسانی جانوں کے تحفظ کے لیئے کوئی اور چارہ نہ رہ جائے اور قانون نافذ کرنے والے حکام کو تشدد میں ملوث عناصر اور پرامن مظاہرین کے درمیان فرق سمجھنا چاہیئے۔ ضلع پلوامہ کے گاؤں سرنو میں بھارتی فوجیوں نے ہفتہ کے روز تلاشی اور محاصرے کی کارروائی کے دوران مظاہرین پر براہ رست اندھا دھند فائرنگ کر کے 11 کشمیریوں کو شہید کر دیا تھا۔مقامی انسانی حقوق کمیشن نے بھارتی حکام کو ضلع پلوامہ میں کشمیریوں کے قتل عام کی حقائق پر مبنی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔ کمیشن نے انسانی حقوق کے علمبار اور انٹرنیشنل فورم فار جسٹس اینڈ ہیومن رائٹس کے چیئرمین محمد احسن اونتو کی طرف سے دائر ایک شکایت پر سیکریٹری داخلہ، ڈی جی پولیس، ڈی سی پلوامہ اور ایس ایس پی پلوامہ کو یکم مارچ کو مقدمے کی آئندہ سماعت پر سانحہ پلوامہ کی حقائق پر مبنی مکمل رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔ محمد احسن اونتو نے پلوامہ میں کشمیریوں کے قتل عام کی تحقیقات کے لیئے ایک غیر جانبدار ٹیم تشکیل دینے کا بھی مطالبہ کیا ہے۔

یہ بھی پڑھیے

مقبوضہ کشمیر میں حالیہ بھارتی جارحیت، او آئی سی کی مذمت

سرینگر: گزشتہ روز میں شہید ہونیوالے 11 میں سے 8 کشمیریوں کی نماز جنازہ ادا

Comments are closed.

Scroll To Top