تازہ ترین
کٹھ پتلی حکومت عوام کے مسائل کو نہیں سمجھ سکتی، سابق صدر آصف علی زرداری

کٹھ پتلی حکومت عوام کے مسائل کو نہیں سمجھ سکتی، سابق صدر آصف علی زرداری

حیدرآباد:(15 دسمبر 2018) سابق صدر آصف علی زرداری ایک بار پھر حکومت پر بڑسے اور کہا کہ جس کی نوکری تین سال کی ہو اسے قوم کے فیصلے کرنے کا کوئی حق نہیں ہے، ہر شخص اپنی آئینی ذمہ داری ادا کرے۔

حیدر آباد میں پیپلز پارٹی کے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے سابق صدر اور پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری نے کہا کہ وہ اسلام آباد کے گونگے بہرے لوگوں سے مخاطب ہیں۔ جس کی نوکری صرف تین سال کی ہو اس کو میری قوم کے فیصلے کرنے کا کوئی حق نہیں ہے ، یہ حق صرف پارلیمنٹ کو ہے، مستقبل صرف سیاستدانوں کا ہے۔انہوں نے کہا کہ کبھی آپ کہاں پہنچ جاتے ہیں اور کبھی کہاں پہنچ جاتے ہیں، آپ کا واسطہ کیا ہے؟، 9 لاکھ کیسز پھنسے ہوئے ہیں۔ جس کی آئینی ذمہ داری ہے وہ اسے ادا کرے۔ 73 کا آئین سب سے بڑی چیز ہے۔آصف زرداری نے موجودہ حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ان سے سوائے مرغی انڈے کے کچھ کام نہیں ہوتا، اگر اُنہیں عقل نہیں تو اِنہیں کیوں لے کر آئے، اس سے بہتر تھا کہ آپ الیکشن ہونے دیتے اور جو بھی پارٹیاں آتیں وہ لڑ جھگڑ کر قومی حکومت بنالیتیں۔ کٹھ پتلی حکومت عوام کے مسائل کو نہیں سمجھ سکتی۔سابق صدر نے کہا کہ مجھے کرکٹ نہیں سیاست آتی ہے اور سیاست کرسکتا ہوں۔ ہم نے اپنے دور کے پہلے 100 روز میں مشرف کی چھٹی کی ، وہ گھر گیا تو اسے سمجھ نہیں آئی کہ اس کے ساتھ کیا ہوا ہے۔آصف علی زرداری نے مزید کہا کہ عوام کے مسائل کوصرف عوامی پارٹی حل کرسکتی ہے، یہ کٹھ پتلی حکومت کچھ نہیں سمجھ سکتی، مجھے اپنے حق پر ڈاکہ ڈلنے پر کوئی تکلیف نہیں لیکن غریبوں کے حق پر ڈاکہ ڈلنے پر مجھے تکلیف ہوتی ہے۔

یہ بھی پڑھیے

نیب راولپنڈی نے بلاول بھٹو زرداری اور آصف علی زرداری کو طلب کرلیا

لاہور: 18ویں ترمیم کو ختم کرنے کی سازش کی جارہی ہے، آصف علی زرداری

Comments are closed.

Scroll To Top