تازہ ترین
کولکتہ میں ایک ہی خاندان کے 14مسلمانوں کو زبردستی ہندو بنالیا گیا

کولکتہ میں ایک ہی خاندان کے 14مسلمانوں کو زبردستی ہندو بنالیا گیا

کولکتہ: (14 فروری 2018) بھارت میں سنگ پریوار کی مسلمانوں کو زبردستی ہندو بنانے کی مہم جاری ہے۔کولکتہ میں ایک ہی خاندان کے چودہ مسلمانوں کو زبردستی ہندو بنالیاگیا۔ مسلمانوں سے سوال پوچھنے پر انتہا پسند ہندوؤں نے صحافیوں کو بھی تشدد کا نشانہ بنایا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق چودہ مسلمانوں کو کولکتہ میں ایک تقریب کے دوران زبردستی ہندو بنایا گیا۔ ہندو تنظیم سیم ہاتی کی دسویں سالانہ تقریب جاری تھی اور اس دوران ایک خاندان کے چودہ افراد کو لایا گیا۔ صحافیوں نے زبردستی ہندو بنائے جانے والوں سے سوال کیا تو ہندو سیم ہاتی کے غنڈوں نے صحافیوں پر تشدد کیا۔ ریاست بنگال کی وزیراعلیٰ ممتا بینرجی نے صحافیوں پر تشدد کی مذمت کی جبکہ پولیس نے تین حملہ آوروں کو گرفتار کرلیا۔

کئی برسوں سے سنگ پریوار کی ذیلی تنظیمیں، شیو سینا، بجرنگ دل اور دیگر تنظیمیں مسلمانوں کو زبردستی ہندو بنارہی ہیں۔بھارتی وزیراعلیٰ مودی کی جماعت بی جے پی اور شیو سینا نے اس مہم کو گھر واپسی کا نام دیاہے۔ہندو شدت پسندوں کا کہناہے کہ تمام مسلمان پہلے ہندو تھے اور بعد میں مسلمان بنے انہیں ہندو بناکر گھر واپس لایا جائےگا۔

یہ بھی پڑھیے

ہریانہ: کشمیری طالبعلموں پرہندو انتہا پسندوں کا تشدد

بھارت: مسلمان سافٹ ویئر انجینیئر پر ہندو شدت پسندوں کا لینڈ جہاد کا الزام

Comments are closed.

Scroll To Top