تازہ ترین
ڈبلیوایچ اونےویڈیوگیمز کھیلنےکی لت ذہنی بیماری تسلیم کرلی

ڈبلیوایچ اونےویڈیوگیمز کھیلنےکی لت ذہنی بیماری تسلیم کرلی

ویب ڈیسک : (19 جون 2018) جوکھیلتےہیں بہت زیادہ ویڈیوگیم وہ ہوشیار ہوجائیں۔عالمی ادارہ صحت نےاس لت کوذہنی بیماری تسلیم کرلیاہے۔

اس بیماری یعنی گیمنگ ڈس آرڈر میں دیر تک ویڈیو گیمز کھیلنا ، اور انہیں دوسرے معمولات زندگی پر فوقیت دینا نمایاں ہیں ۔ عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ یہ لت ذہنی بیماری ہے ۔ جو انسانی ذہن کی استعداد کار کو بری طرح متاثر کرتی ہے ۔ اسے اضطرابی کیفیت سے دوچار ایسا کرتی ہے کہ کھیلنے والا چڑ چڑا اور ضدی ہوتا جاتا ہے ۔ فیصلے کرنے کا فقدان نمایاں ہوتا ہے ۔ برطانوی عوام تو کچھ زیادہ ہی دھتی ہے ۔جبھی تو ہر سال ڈیجیٹل ایڈکشن کے پچاس نئے مریض سامنے آتے ہیں اور اگر اس لت پر قابو نہ پایا گیا تو تعداد میں مزید اضافہ ہوسکتا ہے ۔

طبی ماہرین کہتے ہیں کہ زیادہ تر گیمرز خود یا پھر دوسرے افراد کو نقصان نہیں پہنچاتے لیکن جنہیں ان گیمز کی عادت ہے ان کا علاج ہونا چاہیے ۔ دنیا بھر میں ویڈیو اور الیکٹرونک گیمز کھیلنے کے لیے مختلف احتیاطیں لازم رکھی جاتی ہیں جیسے کہ جاپان میں کھلاڑی مقررہ وقت سے زیادہ ویڈیو گیمز کھیلیں تو انھیں خبردار کیا جاتا ہے ۔ چین میں انٹرنیٹ کمپنی ٹینسینٹ نے بچوں کے لیے مقبول گیمز کھیلنے کی مدت مقرر کی ہوئی ہے۔اسی طرح جنوبی کوریا میں 16 سال سے کم عمر بچوں کے رات بارہ بجے سے صبح چھ بجے کے درمیان ویڈیو گیمز کھیلنے پر پابندی لگی ہوئی ہے۔

یہ بھی پڑھیے

کشمیری نوجوان فاروق ڈار نے 50 لاکھ ٹھکرا دیے

مریخ پر زندگی کی موجودگی کےآثار مل گئے، امریکی خلائی تحقیقی ادارہ

Spread the love

Comments are closed.

Scroll To Top